پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں کی کارروائی غیر معینہ مدت کیلئے ملتوی,

,

نئی دہلی/ یو این آئی/ لوک سبھا کے 15 دسمبر 2017 سے شروع سرمائی اجلاس کی کارروائی کل غیر معینہ مدت کیلئے ملتوی کر دی گئی۔ اسپیکر سمترا مہاجن نے وقفہ سوالات مکمل ہونے کے بعد ضروری دستاویزات ایوان میں پیش کرنے کے بعد اس اجلاس میں ہوئے کام کاج کی تفصیلات پیش کیں اور صبح 11:25 بجے ایوان کی کارروائی غیر معینہ مدت تک ملتوی کر دی۔ قبل ازیں صارفین امور کے وزیر رام ولاس پاسوان نے کنزیومر پروٹیکشن بل 2015 کو واپس لے کر اس کی جگہ کنزیومر پروٹیکشن بل 2018 پیش کیا۔ اس کے بعد قانون و انصاف کے وزیر مملکت پی پی چودھری نے نئی دہلی بین الاقوامی ثالثی مرکز بل 2018 پیش کیا۔ محترمہ مہاجن نے بتایا کہ 16 ویں لوک سبھا کے 13 ویں سیشن میں کل 13میٹنگیں اور 61 گھنٹے کام ہوا۔اس دوران 16 سرکاری بل پیش کئے گئے اور 12 بلوں کو منظوری دی گئی۔ رکاوٹوں اور اس کے نتائج کی وجہ سے ایوان کے 14 گھنٹے 51 منٹ ضائع ہوئے جبکہ آٹھ گھنٹے 10 منٹ دیر تک بیٹھ کر مختلف اہم معاملات پر بات چیت ہوئی۔ دریں اثنائ راجیہ سبھا کے سرمائی اجلاس کی کارروائی کل غیر معینہ مدت کیلئے ملتوی کردی گئی، چیئرمین ایم وینکیا نائیڈو نے بہرحال اجلاس کے دوران کارروائیوں میں بار بار خلل پر تشویش ظاہر کرتے ہوئے اراکین سے کہا کہ وہ اپنے اعمال کا جائزہ لیں۔ وقفہ سوالات ختم ہوتے ہی چیئرمین نے کہا کہ راجیہ سبھا کا اجلاس سرما اپنے اختتام کو پہنچ رہا ہے اور یہ ہم سب کو موقع فراہم کرتا ہے کہ ہم اس بات کا جائزہ لیں کہ اس اجلاس میں ہمارا طرز عمل کیسا رہا۔

,
مزید دیکهے

متعلقہ خبریں