آئی سی آئی سی آئی ،ایکسس بینک کو قومیانے کامطالبہ

حیدرآباد14اپریل﴿یواین آئی﴾آل انڈیا بینک ایمپلائز ایسوسی ایشن ﴿اے آئی بی ای اے ﴾نے مرکزی حکومت سے مطالبہ کیا کہ آئی سی آئی سی آئی اور ایکسس بینک کو قومیائے کیونکہ قرضوں کی منظوری میں رشوت خوری اور جانبداری کے سنگین الزامات ہیں۔ اپنے بیان میں اے آئی بی ای اے کے جنرل سکریٹری سی ایچ وینکٹ چلم نے کہا کہ ہر کوئی اس بات سے واقف ہے کہ آئی سی آئی سی آئی اور ایکسس بینک میں نجی شعبہ کی کارکردگی کے خودساختہ چیمپین کی حقیقت سے ہر کوئی واقف ہے ۔دونوں بینکس میں عوام نے جملہ 9لاکھ کروڑ روپئے جمع کروائے ہیں۔ہمیں عوام کی رقم کے تحفظ کی ضرورت ہے ۔حکومت پرائیویٹ بینکس میں بہتر کام کاج کے بارے میں بات کر رہی ہے ۔ آئی سی آئی سی آئی بینک کو رول ماڈل سمجھاجاتا تھا تاہم اب اس کو کیا ہوا۔قرضوں کی منظوری میں رشوت خوری اورجانبداری کے سنگین الزامات ہیں۔وینکٹ چلم نے کہا کہ غیر اخلاقی کام ایک طویل عرصہ سے جاری ہیں ۔ صرف سرکردہ ایگزیکیٹیوز کو تبدیل کرنا مناسب نہیں ہے ۔سرکردہ یونین لیڈر نے کہا کہ آئی سی آئی سی آئی اور ایکسس بینک کو قومیانے کے لئے آگے آنے کا یہ موزوں وقت ہے ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں