ڈرگس کا استعمال کھلاڑیوں کی صحت کیلئے انتہائی خطر ناک

سرینگر/ ایم ایم میر کے مطابق آجکل ہمارے سماج میں ڈرگس کے ناجائیز استعمال کا سلسلہ تیزی سے بڑھ رہا ہے جس سے نو جوانوں میں گمراہی ، بے راہ روی اور اخلاقی گراوٹ آچکی ہے اکثر نوجوان اس کے بغیر جی نہیں سکتے ہیں اور کئی گھر اسکی لپیٹ میں آکر اُجڑ گئے ہیں والدین کیلئے یہ لمحہ فکر یہ ہی نہیں بلکہ یہ آنے والی نسل کیلئے خطرناک چلینج بن گیا ہے۔ میں سمجھتا ہوں کہ والدین ہی اس سلسلے میں اپنا تعمیری اول ادا کر سکتے ہیں کہ وہ اپنے بچوں کی عادات پر کڑی نگا ہ قائم رکھیں۔ اور ان کی تعلیمی اور کھیلوں کی سر گرمیوں کو باریکی سے جانچ لیں تاکہ اُنکے بچوں کی زند گی اِن ہولناک ڈرگس کے خوفناک پھندے سے آزادرہیں ۔ ڈرگس کے استعمال کی سب سے بڑی وجہ ذہنی دبائو ، بے روزگاری قرار دیا جا رہا ہے۔ ڈرگس سے جسم میں ہولناک اثرات کے خطر ناک آثار رُونما ہوتے ہیں۔ یہ جسم میں خاص قسم کی تبدیلیاں پیدا کرتے ہیں اور جسم کے با یو کمیکل نظام میں تبدیلیاں لاتے ہیں۔ اِن کے عادی ہونے سے نوجوانوں کھلاڑی کئی مہلک بیماریوں کا مستقبل میں شکار ہوتے ہیں اِن کے کھانے سے ایک کھلاڑی یا نوجوان جسمانی طور کمزور ، اور اُسکا دماغی توازن بگڑجانے کا اندیشہ رہتا ہے اتنا ہی نہیں بلکہ مزاج تیز اور اسکا سماجی معیار بُری طرح متاثر ہو جاتا ہے۔ صحت انسانی زند گی کی بنیاد ہے یہ انسان کی ترقی و خوشحالی کا ضامین ہے ڈرگس سے ایک کھلاڑی کو وقتی طور اپنی کار کر د گی کو بہتر بنا سکتا ہے۔ لیکن اس کے مہلک اثرات سے اُن کی زند گی بد مزہ اور خطرے میں پڑ سکتی ہے۔ کھلاڑی کھیل کے دوران عجیب قسم کی حرکتیں کر تے ہیں جس پر ریفری اُن کے خلاف ایکشن لینے پر مجبور ہو جا تا ہے۔ اور ٹیم کو نا کامی کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے۔ اور اتناہی نہیں کھلاڑی کی عمر بھی گھٹ جاتی ہے۔ بحیثیت سابقہ ڈائریکٹر فزیکل ایجوکیشن و کوچ امر سنگھ کالج میں تعلیمی اداروں کے سر براہوں سے تجویز رکھتا ہوں کہ وہ طلبا و طالبات پر کڑی نگاہ رکھیں تا کہ وہ ڈرگس کے استعمال سے دور رہیں ورنہ مستقبل میں اسکے ہولناک اثرات ہمارے سماج پر رونما ہو جائیں گے۔ والدین پر بھی یہ فرض عاید ہو تا ہے کہ وہ اپنے بچوں کی بُری عادتوں پر کڑی نگاہ رکھیں اور انکی بُرے عادتوں کو فوری طور اصلاح کرنے کی زبردست کوششیں کریں۔ تاکہ اُن کے بچے اپنا روشن مستقبل سنوارنے میں سماج میں اہم رول ادا کر سکیں۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں