میدان جنگ میں اپنی تیاروں کو پرکھنے کیلئے مشق

نئی دہلی،15اپریل﴿یواین آئی﴾پاکستان اورچین کے سرحدی علاقوں میں گذشتہ چند دنوں کے دوران ہوئی تمام طرح کے میدان جنگ میں اپنی تیاروں کو پرکھنے کیلئے مشق میں مصروف فضائیہ نے بری افواج کی چھاتہ بردار بریگیڈ کے ساتھ مل کر دشمن کو اپنی حکمت عملی سے صحرائی جنگی میدان میں گھیرکرچاروں خانے چت کرنے کی ایک کامیاب کوشش کی ہے ۔ فضائیہ11اپریل سے 'گگن شکتی 2018'کی مشق میں لگی ہے جس میں پہلی بارانہوں نے فوج اوربحریہ کوبھی شامل کیاہے ۔تقریباً دوہفتے تک چلنے والے اس عظیم مشق میں کل شام ایرفورس نے ایک مشترکہ مہم میں فوج کی چھاتہ بردارکماندوزکو ہوائی راستے سے سیدھے صحرائی میدان جنگ میں اتارا۔مشق میں ایرفورس کے 6سی۔130ہرکولس اور7اے این۔32طیاروں نے 560کمانڈوز،بختربند ہتھیاروں اورجی پی ایس گائیڈیڈ کارگو پلیٹ فارم کودشمن کی نظر سے بچاتے ہوئے میدان جنگ میں اتارا۔ ان طیاروں نے ایرفورس کے مختلف اڈوں سے اڑان بھری۔دریں اثنائجدیدرڈاروں سے لیس اواکس سسٹم سے فضائی علاقوں کی نگرانی کی گئی اورایک جنگی طیارہ سخوئی 30نے ان کوکور فراہم کیا کیا۔فضائی مہموں میں چلائی جانے والی مشقوں میں کمانڈوز،سازو سامان اور رسدکوسیدھے میدان جنگ میں پہچایاجاتاہے جس سے دشمن کی پیش قدمی کو روکا جاسکے اورجلد ازجلد اسے نیست ونابودکیاجاسکے ۔یہ مہمیں خفیہ اینٹلیجنس پرمبنی اطلاع کی بنیاد پر لڑاکاطیاروں کے کور کے بیچ چلائی جا تی ہیں۔ان مہموں میں میدان جنگ میں موجودفوجیوں کی ضروریات کی چیزوں کو بھی پہنچایا جاتاہے ۔کمانڈوزکااولیں کام دشمن کے مواصلات نیٹ ورک کے علاوہ دیگرڈھانچوں کوتباہ کرکے انکے حملوں کوناکام بنانا ہوتا ہے ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں