آر اینڈ بی محکمے کی عجیب منطق، درست حالت میں سڑک پر میگڈم بچھادیا گیا انجینئرکی من مانی کی وجہ سے نقاش پورہ باغوان پورہ روڑ پر خستہ سڑک کو نظر انداز کیا گیا، مقامی ایم ایل اے کا شدید ردعمل

سرینگر/محکمہ آر اینڈ بی کی عجیب منطق اور من مانی کی وجہ سے نقاش پورہ باغوان پورہ بابا ڈیمب روڑ پر سڑک کے اس حصے کو میگڈم سے محروم رکھا گیا جو گذشتہ چار برسوں سے خستہ حالی کا منظر پیش کررہی تھی ،ان باتوںکااظہار ایم ایل اے حبہ کدل ایڈوکیٹ شمیم فردوس نے ایک تحریری بیان میں کیا ہے، انہوں نے بتایا کہ چار برس قبل سڑک مذکورہ پر ڈرین تعمیر کی گئی جس کے بعد سڑک کا یہ حصہ ٹریفک کی نقل و حمل کیلئے نا قابل استعمال بن گیا، جس کے بعد اس سڑک کئے میگڈمائزیشن کیلئے پروپوزل تیار کیا گیااور آج جب میگڈم بچھایاگیا تو لوگ حیرت زدہ ہوکر رہ گئے کہ سڑک کے جس حصے پر میگڈم بچھانا مطلوب تھا اس حصے کو چھوڑ کر محکمہ آراینڈ بی کی من مانی کی وجہ سے سڑک کے ٹھیک حصے پر میگڈم بچھایا گیا اور اس طرح سے لوگوں کے ٹیکس سے وصول شدہ رقومات کو ضائع کیا گیا، مقامی ایل ایل اے ایڈوکیٹ شمیم فردوس نے معاملے کو سنگین قراردیتے ہوئے ریاست کے گورنر ،متعلقہ محکمے کے مشیر اورصوبائی کمشنر سے اس معاملے میںمداخلت کا مطالبہ کیا ہے انہوں نے زور دے کر کہا کہ معاملے کی حساسیت کو مدنظر رکھتے ہوئے فوری طور چھان بین کا عمل شروع کیاجائے تاکہ آئندہ کسی افسر کی من مانی سے خزانہ عامرہ کو لوٹا نہ جاسکے۔ایم ایل اے موصوفہ نے کہا کہ ۹/محرم کو اسی سڑک سے جلوس برآمد ہوتا ہے اور لوگ اس انتظار میںتھے کہ سڑک کو آمدورفت کیلئے بحال کیاجائے گا لیکن متعلقہ محکمہ نے ان کی امیدوں پر بھی پانی پھیردیا۔بیان میںکہا گیا کہ اگر فوری طور ملوث افراد کیخلاف کارروائی عمل میںنہیںلائی گئی تو لوگ سڑکوں پر آکر احتجاج کریںگے جس کی تمام تر ذمہ داریرائٹ ریور سرکیولر روڑ کے متعلقہ انجینئروں پر ہی عائد ہوگی۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں