افغانستان میں خونریز تصادم ،21 فوجی، 15 طالبان ہلاک

کابل﴿ژنہوا﴾ افغانستان کے مغربی صوبہ بگدیس میں سکیورٹی فورسیز اور طالبان باغیوں کے درمیان ہونے والے تصادم میں 21 جوان اور 15 جنگجو ہلاک ہو گئے ۔ صوبائی کونسل کے افسر عبدالعزیز بیگ نے بتایا کہ اتوار کی رات کو ضلع کادس کے کرجاگئی علاقے میں چیک پوسٹ پر بڑی تعداد میں جنگجوؤں نے حملہ کرکے تین فوجیوں اور افغان لوکل پولیس ﴿اے ایل پی﴾ کے 11 اہلکاروں کو ہلاک کر دیا۔ افغان حکومت نے 2010 میں پورے ملک میں گاوؤں اوراضلاع میں سکیورٹی کے سلسلے میں اے ایل پی یا کمیونٹی پولیس کی تشکیل کی گئی ہے ، بالخصوص ان علاقوں میں جہاں فوج اور پولیس کی موجودگی کم ہے ۔ اس کے علاوہ ضلع آب کماری کے گنداب علاقے میں اتوار کو طالبان باغیوں کے ساتھ مڈ بھیڑ میں ایل اے پی کے 7 جوان مارے گئے اور نو دیگر زخمی ہوگئے ۔ انہوں نے کہا،‘ اس مڈ بھیڑ میں کئی جنگجو بھی مارے گئے اور زخمی ہوئے لیکن ان کی صحیح تعداد کا پتہ نہیں چل سکا کیونکہ وہ تمام زخمیوں کو اپنے ساتھ لے کر چلے گئے ’۔ کابل سے 555 کلو میٹرپر واقع اس صوبے میں لمبے عرصے سے سکیورٹی دستوں اور طالبان جنگجوؤں کے درمیان مڈ بھیڑ جاری ہے ۔ چار سال قبل غیر ملکی دستوں کی واپسی کے بعد سے حکومت مخالف طالبان باغیوں کی جانب سے افغان سکیورٹی دستوں پر حملوں میں اضافہ کی وجہ سے پر تشدد واردات بڑھ رہے ہیں۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں