وزیر اعظم کو ملنے والے تحائٰف اور یادگاری نشانات کی نیلامی ختم

نئی دہلی﴿یو این آئی﴾ وزیر اعظم نریندر مودی کو ملنے والے تحائف اور یادگاری نشانوں کی ایک ہفتے تک چلنے والی نیلامی ہفتے کے روز کو ختم ہو گئی جس میں 1800 تحائف پر بولی لگائی گئی۔ ان اشیائ کی نیلامی سے حاصل ہونے والے پیسے کا استعمال ’نمامی گنگے منصوبہ‘ میں کیا جائے گا۔ دو مرحلوں کی اس نیلامی میں ملک کے باشندوں نے بڑھ چڑھ کر حصہ لیا۔ پہلے مرحلے میں نیشنل میوزیم آف ماڈرن آرٹ میں دو دنوں تک تحائف اور اشیائ کی بولی لگائی گئی اس کے بعد دیگر تحفوں اور چیزوں کی آن لائن ای نیلامی کی گئی۔ اس دوران 1800 اشیائ کی فروخت ہوئی۔ نیلامی میں خصوصی طور پر ہاتھ سے بنائی گئی لکڑی کی بائک 5 لاکھ روپے میں تو ریلوے پلیٹ فارم پر وزیر اعظم نریندر مودی کو دکھانے والی پینٹنگ بھی 5 لاکھ روپے میں فروخت ہوئی۔ آن لائن نیلامی میں بھگوان شیو کی مورتی 10 لاکھ روپے میں فروخت ہوئی۔ لکڑی کا اشوک پلر 13 لاکھ روپیے میں اور آسام کی روایتی ٹرے جو اسٹینڈ کے ساتھ ہے وہ 12 لاکھ روپیے میں فروخت ہوئی۔ امرتسر میں ایس جی پی سی سے ملنے والا یادگاری نشان ‘ڈِوینیٹی’ 10 لاکھ ایک ہزار روپیے میں فروخت ہوا۔ گوتم بدھ کی مورتی 7 لاکھ روپیے میں اور نیپال کے سابق وزیر اعظم سشیل کوئیرالاکی جانب سے تحفے میں پیش کی گئی شیر کا مجسمہ 5 لاکھ 20 ہزار روپیے میں فروخت ہوا جبکہ چاندی کا ایک کلش 6 لاکھ روپیے میں فروخت ہوا۔ چھاترپتی شیوا جی کاپلاسٹر آف پیرس سے بننے والا نیم مجسمہ 22 ہزار روپیے میں فروخت ہوا جبکہ اس کی قیمت محض ایک ہزار روپیے تھی۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں