تھائی لینڈ کی شہزادی اپنے فیصلے پر قائم

سرینگر/ مانٹرنگ/ تھائی لینڈ کے بادشاہ کی جانب سے مخالفت کے بعد رسکا چارٹ پارٹی نے وزیر اعظم کے عہدے کی نامزدگی واپس لے لی ہے لیکن شہزادی اب بھی اپنے فیصلے پر قائم ہیں۔ تھائی لینڈ کی شہزادی کو انتخابات میں وزیراعظم کے امیدوار کیلئے نامزد کرنے والی سیاسی جماعت تھائی رسکا چارٹ پارٹی کا کہنا ہے کہ وہ بادشاہ کی خواہش کا احترام کرتے ہوئے ان کے نامزدگی واپس لیتے ہیں۔ تھائی رسکا چارٹ پارٹی متنازع سابق وزیر اعظم تھاکسن شیناوترا کی اتحادی ہے۔ جمعے کے روز تھائی بادشاہ واجیرالنونگ کورن نے اپنی بہن شہزادی بولرتانا ماہیڈول کی انتخابات میں نامزدگی اور سیاست میں حصہ لینے کے فیصلے کو نامناسب قرار دیا تھا۔ ان کی نامزدگی سے شاہی خاندان کی عوامی سیاست سے باہر رہنے کی روایت ٹوٹ جاتی۔ سیاسی جماعت کا کہنا تھا کہ وہ شاہی حکم کو مانتے ہوئے بادشاہ اور شاہی خاندان کے وفادار ہیں۔ سیاسی جماعت کی جانب سے یہ بیان اس شاہی حکم کے جواب میں آیا ہے جس میں کہا گیا تھا کہ اس طرح کا اقدام عوام کی ثقافت کو مجروع کرے گا۔ تمام تھائی ٹی وی چینلز پر نشر ہونیوالے بیان میں کہا گیا تھا کہ چاہے شہزادی اپنی تمام تر شاہی ذمہ داریوں سے تحریری طور پر دستبردار ہو چکی ہیں لیکن وہ اب بھی شاہی رتبہ رکھتی ہیں اور چکری شاہی خاندان کا حصہ ہیں۔ اور شاہی خاندان کے کسی بھی معزز رکن کا کسی بھی صورت میں سیاست میں حصہ لینا، قوم کی روایات، رسم و رواج اور ثقافت کے منافی تصور کیا جاتا ہے لہٰذا اس فیصلے کو انتہائی غیر مناسب مانا جاتا ہے۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں