دہشت گردی کے خاتمے کےلئے بھارت مدد کےلئے تیار-   راجناتھ کی عمران خان کو پیش کش

سرینگر / الفا نیوز سروس/مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ نے پاکستانی وزیراعظم عمران خان کو پیش کش کی کہ دہشت گردی کے خاتمے کےلئے بھارت پاکستان کو ہر ممکن مدد دینے کےلئے تیار ہے لہذا عمران خان ملک میںدہشت گردی کا صفایا کریں ۔ اس دوران انہوںنے کہاکہ این ڈی ائی پھر اقتدار میں آئےگی اور اکثریت کےساتھ اقتدار میں آئےگی ، مرکزی وزیرداخلہ راجناتھ سنگھ کا کہنا تھا کہ بجائے اس کے عمران خان مودی کے دوبارہ اقتدار میں آنے کی خواہش کریں عمران خان ملک میں دہشت گردی کا صفایا کریں تو ایسے میںبھارت پاکستان کو ہر ممکن مدد دینے کےلئے تیار ہے۔راجناتھ سنگھ کا کہنا تھا کہ پاکستان دہشت گردی کا مرکز بناہوا ہے اور اگر اس مرکز کا صفایا ہوگیا تو دونوںممالک کے درمیان تعلقات بہتر ہوجائیں گے ،میڈیا کے سوالوں کاجواب دیتے ہوئے راجناتھ سنگھ کا کہنا تھا کہ عمران خان نے دوبارہ مودی کے برسر اقتدارا ٓنے کی خواہش ظاہر کی ہے اور یہ امید ظاہر کی ہے کہ اگر وہ دوبارہ اقتدار میں آتے ہیںتو دونوں ممالک کے درمیان تعلقات بہتر ہوجائیں گے لیکن ہم عمران خان کو یہ تجویز پیش کررہے ہیں کہ وہ پہلے ملک کے اگر دہشت گردی کامکمل صفایاکریں اور اگر اس میں اسے مدد کی ضرورت پڑتی ہے تو یقینی طو ر پر بھارت پاکستان کی ہر ممکن مدد کےلئے تیار ہے ،انہوںنے کہا کہ پاکستان کے ساتھ تعلقات کو بہتر بنانے میں بھارت کوکوئی حرج نہیں ہے اور نہ ہی مذاکرات کی بحالی میں بھارت کو کوئی اعتراض ہے بلکہ دونوں ممالک کے درمیان بہتر تعلقات اور بات چیت کی بحالی میں اگر کوئی رکاوٹ آتی ہے تووہ دہشت گردی ہے جو کہ پاکستانی سر زمین پر اب بھی جاری ہے ۔انہوںنے کہا کہ آج بھی اس پاکستان میں دھماکے ہوتے ہیں اور لوگ مارے جاتے ہیںلہذا پاکستانی وزیراعظم کو چاہئے وہ ان طاقتوں اور عناصر کا صفایا کریں جو ان کے اپنے ملک کے ساتھ ساتھ بھارت میں بھی دہشت گردی پھیلانے کی تاک میں رہتے ہیںتاہم انہوںنے کہا کہ ہم اپنے ملک مین دہشت گردی پھیلانے کی کسی کو اجازت نہیں دیں گے اور نہی ملک کے مسلمان ایسا کرنے دیںگے۔ الفا نیوز سروس کے مطابق انہوںنے کہاکہ کشمیر کے اندر بھی دہشت گردانہ واقعات میں کمی لائی گئی ہے اور اس طرح سے اب کشمیر نارملسی کی جانب بڑھ رہا ہے جس میں فوج اور سیکورٹی فورسز کے ساتھ ساتھ پولیس بہتر تال میل کےساتھ کام کررے ہیں ۔ان کا کہنا تھا کہ پاکستان سے کافی سارے خطرات اب بھی ہیں اور یہ ملک دہشت گردی کا جب تک مرکز بنا رہے گا پڑوسیوں کو اس سے خطرات لاحق رہیں گے۔
 لہذا بہتر یہ ہے کہ پاکستان کو دہشت گردی سے پاک سرزمین بنانے کےلئے سبھی لوگ آگے آئیں ۔انہوںنے کہاکہ پاکستانی وزیراعظم کو بھارتی وزیراعظم نے پہلے ہی پیش پیش کردی ہے کہ دہشت گردی بند کرو اور مذاکرات کےلئے راستہ بناو اور بھاجپا ابھی بھی اسی پر قائم ہے ۔انہوںنے مزید کہاکہ ہم چاہیں گے کہ دہشت گردی کا خاتمہ پوری طرح سے ہو ااور اس میں کسی بھی طرح سے کوئی پریشانی والی بات نہیں ہے ،پاکستان دہشت گردی کی فیکٹری پرتالا چڑھائے بھارت مذاکرات کا دروازہ کھول دےگا کیونکہ دہشت گردی اور مذاکرات بیک وقت ممکن نہیں ہیں،راجناتھ سنگھ کا کہنا تھا کہ کشمیر کے اندر بھی حالات پاکستان کی وجہ سے ہی خراب ہورہے ہیں اور اگر وہاں حالات بہتر ہونے ہیں تو پاکستان کو کشمیر کے اندر مداخلت بند کرنا ہوگی جس کےلئے پاکستانی وزیراعظم کواقدامات اٹھانے ہی ہونگے تاکہ دونوں ممالک کے درمیان مزاکرات کا سلسلہ بحال ہوسکے ۔انہوںنے مزید کہاکہ ہم چاہتے ہیںکہ لوگ امن سے رہیں اور امن کےلئے لازمی ہے کہ دہشت گردانہ کاروائیوں میںملوث لوگوں کےخلاف کاروائی عمل میںلائی جائے ۔الفا نیوز سروس کے مطابق راجناتھ سنگھ نے بھاجپا کی جیت کے حوالے سے کہا کہ بھاجپا سال 2019کے انتخابات بھی اکثریت سے جیت لے گی اور سال 2014کے مقابلے میںبہت زیادہ سیٹیں حاصل کرےگی ،انہوںنے کانگریس پر الزام عائد کیا کہ اس جماعت نے پچاس برسوں سے زائد ملک میں حکومت کی لیکن یہ ملک کی غربت ختم ہوئی اور نہ ہی ملک کی سالمیت مضبوط رہی ،انہوںنے مزید کہاکہ کانگریس اب رونا رورہی ہے کیونکہ اس کے پرپاس اقتدار نہیں ہے اور اگر وہ اقتدار میں آتی ہے تو وہ سب کچھ کرلیتی ہے جس کا وہ اب بھاجپا پر الزام عائد کر رہی ہے ۔انہوںنے مزید کہاکہ حالات کو دیکھتے ہوئے ہمیں یہ بات ذہن نشین کرلینی ہوگی کہ ملک کے عوام نے مودی کو اگلی بار کےلئے بھی بحیثیت وزیراعظم کے دیکھنے کی خواہش ظاہر کی ہے اور ۳۲ تاریخ کو قوم کوفیصلہ آئیگا جس میں این ڈی اے کی جیت ہوگی اور باقی لوگوں کی ہار ہوگی ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں