ملک پورہ واقعہ پر انتظامیہ کا رول قابل تعریف:قوام شلوتی - ڈی آئی جی نارتھ نے سول سوسائٹی کو تحقیقات سے آگاہ کیا

چند روز قبل ملک پورہ سونا واری میں ایک درندہ صفت شخص کی وحشیانہ حرکت کے بعد گو کہ پوری وادی میںلوگوں کو زبردست رنج وغم کا سامنا ہے اور کئی سارے علاقوں میں احتجاجی جلوس برآمد ہورہے ہیں ۔ دوسری جانب پولیس اور سول انتظامیہ بھی درندہ صفت ملزم کو کیفر کردار تک پہنچانے کیلئے تحقیقات میں کوئی کسر باقی نہیں چھوڑ رہے ہیں اور کل سوموار کو ڈی آئی جی شمالی کشمیر چودھری سلیمان نے ڈاک بنگلہ سمبل میں سول سوسائٹی کے معززین کے ساتھ اس سنگین معاملہ پر تبادلہ خیال کیا اور لوگوں کو یقین دلایا کہ ملزم کو سخت سے سخت سزا دلانے کیلئے ایس ڈی پی او ثاقب صاحب کی قیادت میں پولیس کی ایک خصوصی سیل تشکیل دی گئی ہے تحقیقاتی ٹیم میں ایس ایچ او سمبل حسین احمد کے علاوہ کئی اور آفیسران بھی شامل ہیں اسکے علاوہ علاقہ میں امن و امان کو قائم رکھنے کیلئے اے ایس پی بانڈی پورہ اعجاز احمد، ایس ڈی ایم سوناواری سیدشہنواز اور تحصیلدار سمبل قادری صاحب انتظامات کی نگرانی کررہے ہیں۔ جو تاحال تن دہی سے تمام قانونی لوازمات پوری کرہی ہے اور عنقریب ہی ملزم کے خلاف فرد جرم عائد کر کے عدالت مجاز سے مذکورہ ملزم کو سخت سے سخت سزا دینے کی گذارش کرئینگے۔ میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے ڈی سی بانڈی پورہ شہباز مرزا صاحب اور ایس ایس پی بانڈی پورہ راہل ملک نے عوام سے اپیل کی کہ وہ امن و امان کو برقرار رکھتے ہوئے پولیس کو تحقیقات کرانے میں مدد کریں۔ اس موقعہ پر سول سوسائٹی سے وابستہ تمام اراکین نے ایڈمنسٹریشن کو یقین دلایا کہ وہ کسی بھی صورت میں امن و امان کو برقرار رکھنے کیلئے تیار رہیں گے ۔ادھر شیخ قوام الدین شلوتی نے جہاں اس سنگین مسئلہ پر سول اور پولیس انتظامیہ کے رول کو کافی سراہا ہے وہیں عوام سے اپیل کی ہے کہ وہ امن و اما ن کو برقرار رکھتے ہوئے ملی اتحاد مظاہرہ کریں۔ تاکہ انتظامیہ کو اس رنجیدہ اور سنگین معاملہ کو تحقیقات میں کوئی پیچیدگی کا سامنا نہ ہو۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں