بھارتی بورڈ کو آئی سی سی کے سامنے ہتھیار ڈالنا پڑگئے،  دھونی کے وکٹ کیپنگ دستانوں پر لگے ہندوستانی فوج کے بلیدان بیج کے سلسلے میں تنازعہ پیدا ہوگیا تھا

دبئی/ آئی سی سی نے بھارتی کرکٹ بورڈ کی درخواست مسترد کرتے ہوئے بھارتی وکٹ کیپر اور سابق کپتان مہندرا سنگھ دھونی کوبھارتی فوج کی حمایت والے گلوز پہننے سے روک دیا۔آئی سی سی کے ترجمان کا کہنا ہے کہ کرکٹ قوانین کے مطابق کسی بھی کھیل کے سامان پر کوئی پیغام یا لوگو چسپاں نہیں کیا جا سکتا۔ترجمان کے مطابق ایم ایس دھونی کے وکٹ کیپنگ گلوز پر چسپاں لوگو قوانین کی خلاف ورزی ہے۔ جنوبی افریقہ اور بھارت کے درمیان کھیلے جانے والے ون ڈے میں دھونی جب وکٹ کیپینگ کے لیے میدان میں آئے تو ان کے  دستانوں پر بھارتی اسپیشل فورس کا نشان موجود تھا۔انٹرنیشنل کرکٹ کونسل نے بی سی سی آئی کو دھونی سے ان کے گلووز سے لوگو ہٹانے کی ہدایت جاری
 کی۔جواب میں بورڈ آف کنٹرول فار کرکٹ ان انڈیا  نے آئی سی سی کو اس ضمن میں نرم رویہ اختیار کرتے ہوئے دھونی کو فوجی لوگو والے دستانے پہننے کی اجازت دینے کی درخواست کی۔آئی سی سی کی جانب سے بھارت کے لیے ہمیشہ نرم رویہ برتا گیا اس لیے معاملہ صرف تنبیہ پر ہی ٹل گیا۔ چار سال قبل جب مسلمان انگلش کھلاڑی معین علی پر ہاتھ پر'غزہ کو بچاؤ، فلسطین کو آزاد کراؤ' کا بینڈ پہننے پر ایک میچ کی پابندی عائد کر دی گئی تھی۔ادھر ہندوستانی کرکٹ ٹیم کے وکٹ کیپر بلے باز مہندر سنگھ دھون کے دستانوں پر بلیدان بیج سے اٹھے تنازعہ سے باہر نکل کر گزشتہ چمپئن آسٹریلیا کے خلاف اتوار کو ہونے والے آئی سی سی عالمی کپ مقابلے میں جیت حاصل کرے گی۔ہندوستان نے عالمی کپ میں اپنی مہم جنوبی افریقہ کے خلاف شاندار جیت کے ساتھ شروع کی تھی لیکن اس پر دھونی کے وکٹ کیپنگ دستانوں پر لگے ہندوستانی فوج کے بلیدان بیج کے سلسلے میں تنازعہ پیدا ہوگیا تھا۔ ہندوستانی کنٹرول بورڈ âبی سی سی آئیá نے اس تنازعہ میں بین الاقوامی کرکٹ کونسل âآئی سی سی á نے اس معاملے میں نرم رویہ اپنانے کی اپیل کی تھی لیکن آئی سی سی نے ہندوستانی بورڈ کی درخواست کو سرے سے مسترد کردیا تھا۔ اب دھونی اپنے دستانوں کے ساتھ تو کھیلیں گے لیکن انہیں اس نشان کو ڈھکنے کے لئے اس پر بیج لگانا ہوگا۔دنیا کی نمبر دو ٹیم ہندوستان اور گزشتہ چمپئن آسٹریلیا کے درمیان مقابلے سے 48 گھنٹے پہلے یہ تنازعہ عالمی کپ پر چھایا رہا اور معاملے اتنا طول پکڑ ا کہ ہندوستانی وزیر کھیل کرن رجیجو کو اس معاملے میں بیان دینا پڑ گیا۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں