ماب لنچنگ مخالف ریلی نکالنے پر گجرات پولیس نے 40 مزید افراد کوگرفتار کیا

سورت، 9 جولائی â یواین آئیá گجرات کے سورت شہر میں جھارکھنڈ کے حالیہ مبینہ ماب لنچنگ کی مخالفت میں گزشتہ پانچ جولائی کو انتظامیہ کی منظوری کے بغیر ریلی نکال رہے مسلم فرقے کے جلوس کے مشتعل ہونے کے معاملے میں پولیس نے آج 40 مزید افرادکو گرفتار کر لیا ۔ شہر کے اٹاوا لائینس تھانے کے پولیس افسر ایچ آر کواڈیا نے یو این آئی کو آج بتایا کہ بلوا کرنے اور پولیس پر قاتلانہ حملہ کرنے کے الزام میں 40 مزید افراد کو آج پکڑا گیا ہے ۔ اب تک کل 49 افرادپکڑے جا چکے ہیں ۔ ابھی مزید گرفتاریاں ہو سکتی ہیں۔ ہجوم نے ریلی نکالنے سے روکنے پر پتھراؤ کر کے دو بسوں اور پولیس کی دو گاڑیوں کو نقصان پہنچا یا اور چار سینئر پولیس افسران کو زخمی کر دیا تھا ۔ پولیس نے شہر کے چوک بازارکے نزدیک پیش آئے اس واقعہ میں ہجوم کو قابو کرنے کے لئے ہوا میں دوراؤنڈ فائرنگ کی اور آٹھ آنسو گیس کے گولے داغے تھے ۔ شہر کی ایک مسلم تنظیم نے چوک مارکیٹ سے کلیکٹردفتر تک جمعہ کو ریلی نکالنے کی منظوری مانگی تھی پر کام کاج کا دن ہونے اور مصروف علاقہ ہونے کے پیش نظر اس کی اجازت نہیں دی گئی تھی ۔ ساتھ ہی یہ بات بھی ذہن میں رکھی گئی تھی کہ یہ واقعہ گجرات کا نہیں تھا ۔ اس کے باوجود ہجوم جب ریلی نکالنے لگا تو وہاں پہلے سے تعینات پولیس فورس نے انہیں روکا ۔ اس پر ہجوم مشتعل ہوکر پتھراؤ کرنے لگا جس میں ایک جوائنٹ پولیس کمشنر، ڈپٹی پولیس کمشنر، اسسٹنٹ پولیس کمشنر اور پولیس سب انسپکٹر زخمی ہو گئے ۔ دو سٹی بسوں اور اتنی ہی پولیس گاڑیوں کو بھی نقصان پہنچا۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں