امریکہ بغیر کسی پیشگی شرائط کے ایران سے بات چیت کیلئے تیار، میزائل پروگرام پر مذاکرات شروع کرنے کےلئے کسی بھی امکان سے ایران کا انکار

واشنگٹن، 17 جولائی âاسپوتنکá امریکہ نے کہا ہے کہ وہ بغیر کسی پیشگی شرائط کے ایران سے بات چیت کے لئے تیار ہے ، لیکن ایران کو دکھانا ہوگا کہ وہ اس طرح کی بات چیت کےلئے تیار ہے ۔امریکی وزارت خارجہ کے ترجمان مورگن اورٹاگس نے منگل کو ایک بیان جاری کرکے یہ باتیں کہیں۔مسٹر اورٹاگس نے کہا‘‘ہمارا پیغام یہ ہے کہ ہم ایران سے بات کرنے کے خواہشمند ہیں۔ صدر ڈونالڈ ٹرمپ اور وزیر خارجہ مائیک پومپیو کئی بار کہہ چکے ہیں کہ وہ بغیر کسی پیشگی شرط کے بات چیت کرنے کےلئے تیار ہیں۔ ایران کو صرف اتنا دکھانا ہوگا کہ وہ اس طرح کی بات چیت کےلئے تیار ہے ’’۔ دریں اثنائ ایرانی نے اپنے میزائل پروگرام پر مذاکرات شروع کرنے کےلئے کسی بھی امکان سے انکار کردیا ہے۔ اقوام متحدہ میں، ایرانی مشن نے منگل کو ایک بیان جاری کرکے یہ بات کہی۔ بیان کے مطابق، ایران نے ان تمام قیاس آرائیوں سے سرے سے مسترد کرتا ہے جس کے مطابق اگر امریکہ مستقبل میں خلیجی ممالک کومیزائلوں اور دیگر ہتھیاروں کی فروخت پر پابندی عائد کردیتا ہے تو پھر ایران اپنے میزائل پروگراموں پر بات چیت شروع کرسکتا ہے ۔بیان میں کہا گیا ‘‘ ایران کے میزائلوں اور اس کے میزائل پروگرام پر کسی بھی ملک کے ساتھ کسی صورت حال میں کوئی بات چیت نہیں ہوگی۔قابل ذکر ہے کہ عمان کی خلیج میں آبنائے ہرمز کے قریب دو تیل کے ٹینکروں الٹیئر اور کوکوکا کرجیس میں دھماکہ کا واقعہ اور ایران کے خفیہ ڈرون طیارہ کو مار گرانے کے بعد سے دونوں ممالک کے درمیان کشیدگی انتہا پر پہنچ گئی ہے ۔گزشتہ ہفتے ایران نے بین الاقوامی ایٹمی ہتھیار معاہدے کے تحت یورینیم کی افزودگی کی مقررہ حد کو پار کرلیا تھا۔ایران نے 3.67 فیصد کی مقررہ حد سے تجاوز کرکے اپنا یورینیم کی افزودگی میں 4.5 فیصد اضافہ کرلیا ہے ۔ بین الاقوامی جوہری توانائی ایجنسی âآئی ای ای اے á نے اس کی تصدیق کی ہے ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں