کرناٹک میں گائے کے ذبیحہ کی روک تھام سے متعلق قانون کیلئے آرڈیننس بنگلورو 11 دسمبر

(یواین آئی) : کرناٹک کے وزیر اعلی بی ایس یدیورپا نے کہا ہے کہ قانون ساز کونسل کے ملتوی ہونے سے قبل منظور نہ ہونے والے گائے کے ذبیحہ کی روک تھام سے متعلق بل کو موثرکرنے کے لئے ریاستی حکومت ایک آرڈیننس لائے گی۔ مسٹر یدیورپا نے جمعہ کے روز یہاں اپنی سرکاری رہائش گاہ پر صحافیوں کو بتایا کہ کرناٹک میں جانوروں کے تحفظ اور جانوروں کے ذبیحہ کی روک تھام سے متعلق بل کے لئے ایک آرڈیننس لایا جائے گا۔ انہوں نے کہا ، ’’ہم آرڈیننس لائیں گے ۔ جیسا کہ آپ کو معلوم ہے کہ قانون ساز کونسل کے چیئرمین نے تعاون نہیں کیا ہے ‘‘۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے قانون ساز کونسل کے چیئرمین کے پرتاپ چندر شیٹی کومنگل کے روز دوبارہ ایوان کا اجلاس طلب کرنے کو کہا ہے ۔ انہوں نے کہا ، ‘‘ہم نے گورنر کے سامنے بھی درخواست پیش کی ہے ۔ قانون ساز کونسل کے چیئرمین کو ایوان کی کارروائی اچانک ملتوی کرنے کا کوئی حق نہیں ہے جیسا کہ انہوں نے کیا ہے ۔ وزیر اعلی نے کہا کہ یہ پوری دنیا کو معلوم ہے کہ ہندو مذہب میں گائے کی پوجا کی جاتی ہے۔ زرعی ملک ہندوستان میں مویشی پالنا کاشت کاروں کیلئے آمدنی کا ایک ذریعہ ہے اور کاشتکاری کے کام میں جانوروں کا استعمال کیا جاتا ہے ۔ اس نقطہ نظر سے گائے کو ہندوستانی ثقافت کی ملکیت سمجھا جاتا ہے ۔ اسمبلی نے بل منظور کردیا ہے ، جوموجودہ قانون کو مزید تقویت فراہم کرے گا۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں