دربار مو کو ختم کرنے سے جموں صوبہ کے تاجر بیکار ہو گئے ہیں

تعمیر وترقی کے حوالے سے کئے جانے والے دعوئے جھوٹ کا پلندہ ہے /غلام نبی آزاد

 کانگریس کے سینئر لیڈر اور سابق مرکزی وزیر نے ایک دفعہ پھر جموںوکشمیر انتظامیہ کو ہدفہ تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہاکہ دربار مو کی روایت کو ختم کرنے سے جموں صوبہ کے لوگوں کی معاشی حالت خراب ہوئی ہے ۔ انہوںنے کہاکہ تعمیر وترقی کے حوالے سے جو دعوئے کئے جا رہے ہیں وہ زمینی سطح پر میل نہیں کھا رہے ہیں۔ اطلاعات کے مطابق جموں میں نامہ نگاروں سے بات چیت کے دوران سابق وزیر اعلیٰ غلام نبی آزاد نے کہاکہ جموں صوبہ کے لوگوں کے ساتھ موجودہ حکومت نے بڑی نا انصافی کی ہے کیونکہ دربار مو کی روایت سے صرف جموں صوبہ کے کاروباری متاثر ہوئے ہیں۔ انہوںنے کہاکہ کشمیر صوبہ میں سیاحت سے وہاں کی معاشی حالت ٹھیک ہو رہی ہیں لیکن جموں صوبے کے لوگوں کو پریشانیوں کا سامنا ہے اور اُس سے بڑھ کر یہ کہ موجودہ انتظامیہ نے جموں صوبے کے لوگوں کو دربار مو کی روایت ختم کرنے کا تحفہ دیا ہے جس وجہ سے یہاں کے لوگوں کو سرما کے موسم میں سخت پریشانیوں کا سامنا کرناپڑے گا اور تاجر برادری سب سے زیادہ متاثر ہوئی ہے۔ انہوںنے کہاکہ دربار مو کو ختم کرنے سے جموں صوبہ میں بے روزگاری میں بھی اضافہ ہوگا جوعوام کو کسی بھی صورت میں قابلِ قبول نہیں ہوگا۔ انہوںنے کہاکہ موجودہ انتظامیہ کی جانب سے تعمیر وترقی کے حوالے سے جو دعوئے کئے جارہے ہیں وہ زمینی سطح پر میل نہیں کھا رہے ہیں۔ انہوںنے کہاکہ سابق پی ڈی پی ، بی جے پی حکومت نے بھی جموںوکشمیر کے لوگوں کے ساتھ بہت بڑا مذاق کیا۔انہوںنے کہاکہ جموں کے لوگوں نے ہمیشہ سیکولراز م کو پروان چڑھایا ہے اور ایسی قوتوں کو شکست دے دو چار کیا جو بھائی چارے اور اخوت کو پار ہ پارہ کرنے کے خواہاں تھے۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں