مرکزی وزیر مملکت دفاع و سیاحت نے کپواڑہ کا دورہ کیا

باغبان، یوتھ کلب ، پی آر آئی ، انتظامیہ کے ساتھ بات چیت کی

جموں و کشمیر کیلئے مرکزی حکومت کے عوامی رابطہ پروگرام کے ایک حصے کے طور پر مرکزی وزیر مملکت برائے دفاع اور سیاحت اجے بھٹ نے آج شمالی کشمیر کے سرحدی ضلع کپواڑہ کا تفصیلی دورہ کیا ۔ دورے کے دوران وزیر نے ایل او سی کے قریب فارورڈ پوسٹ کا دورہ کیا اور علاقے میں سیکورٹی کے منظر نامے کا جائیزہ لیا ۔ انہوں نے فوج کے افسران اور فوجیوں سے تبادلہ خیال کی ۔ بعد میں وزیر نے ہارٹیکلچر بیس سٹیشن چوگل کا دورہ کیا جس نے 184 کنال اراضی میں توسیع کی ۔ انہوں نے ہارٹیکلچر ڈیپارٹمنٹ کے سٹال کا معائینہ کیا اور پھلوں کی مختلف اقسام ، انگور ، اخروٹ ، نامیاتی شہد دیکھا اور پھلوں کی مختلف اقسام کے بیجوں کی نرسریوں کا دورہ کیا ۔ انہوں نے خواتین سیلف ہیلپ گروپس اور مقامی پی آر آئی کے علاوہ ترقی پسند آرکیڈسٹ اور کسانوں کے ساتھ بھی بات چیت کی ۔ اِس موقعہ پرضلع ترقیاتی کمشنر کپواڑہ امام الدین ، ناظم سیاحت کشمیر جی این ایتو ، ایس ایس پی کپواڑہ ڈاکٹر جی وی سندیپ ، ایس پی ہندواڑہ سندیپ گپتا ، اے ڈی سی ہندواڑہ نذیر احمد میر ، ڈی ڈی سی ممبر راجور ایم سلیمان ، بی ڈی سی چئیر پرسن سوکت احمد اور دیگر متعلقہ افراد موجود تھے ۔ اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے وزیر نے سرحدی اضلاع کپواڑہ کے عام لوگوں کے ساتھ ہونے پر خوشی کا اظہار کیا ۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر میں صوفی سنتوں کے عظیم آداب اب بھی زندہ ہیں جیسا کہ ان کی آمد کے دوران یہاں کے لوگوں کے آداب سے ظاہر ہوتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر واقعی زمین پر جنت ہے اور وزیر اعظم نریندر مودی کی سربراہی میں حکومت علاقے کی بالخصوص سرحدی ضلع کپواڑہ کی مجموعی ترقی فراہم کر کے اس کی خوبصورتی کو برقرار رکھنے کی ہر ممکن کوشش کر رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پی آر آئی ، سیلف ہیلپ گروپس اور عوام کی طرف سے پیش کردہ تمام مطالبات پر غور کیا جائے گا ۔ اور یونین کی سطح پر حکومت اورلیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا کے ساتھ پیش کیا جائے گا ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں