پنجاب میں زیرتعلیم بڈگام کے میڈیکل طالبعلم کی پُراسرارموت

کالج ہوسٹل کی چھت پرلٹکا پایاگیا

وسطی ضلع بڈگام کے چیوڈارہ بیروہ گاﺅںمیں اُسوقت تشویش اورغم کی لہردوڑ گئی ،جب یہاں یہ اطلاع پہنچی کہ اس گاﺅںکے رہنے والے ایک میڈیکل طالب علم کی نعش کولدھیانہ پنجاب میں واقع کالج کے ہوسٹل کی چھت کے اوپرایک سولرپلانٹ سے لٹکاپایاگیا ہے ۔20سالہ عمردیوکی نعش کوگھرلانے کیلئے کچھ افرادخانہ پنجاب روانہ ہوگئے ہیں ،ملی تفصیلات کے مطابق چیوڈارہ بیروہ بڈگام سے تعلق رکھنے والا 20سالہ نوجوان عمردیو ولدعبدالاحددیو کچھ برسوں سے پنجاب کے شہر لدھیانہ میں واقع ایک کالج میں زیرتعلیم تھا ۔بتایاجاتاہے کہ عمردیو RIMTیونیورسٹی واقع لدھیانہ روڑگوبندگنڈمنڈی پنجاب میں بی ایس سی ’ریڈیالوجی ‘ کاطالب علم تھا۔عمر دیو کے اہل خانہ نے ذرائع ابلاغ کوبتایاکہ اُنھیں یہ اطلاع ملی کہ عمردیوکی نعش کوکالج ہوسٹل کی چھت کے اوپر سولرپلانٹ سے لٹکاپایاگیا ہے ۔بتایا جاتاہے کہ پُراسرارحالت میں کالج کی چھت پرمردہ پائے گئے طالب علم عمردیو کے فیس بُک پرآخری الفاظBy byلکھے تھے ۔افرادخانہ نے مزیدبتایاکہ عمر کی المناک اورپُراسرارموت سے متعلق اطلاع ملتے ہی اُس کابھائی پنجاب روانہ ہوگیا تاکہ عمر کی میت کوگھر پہنچایا جاسکے ۔اُدھر میڈیا رپورٹ کے مطابق پنجاب پولیس نے لدھیانہ میں واقع کالج کے ہوسٹل کی چھت سے کشمیری میڈیکل طالب علم کی نعش لٹکے پائے جانے کے واقعے کی تحقیقات شروع کردی ہے۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں