حج 2018کا اعلان -  21روانگی مقامات متبادل کی شرط کے ساتھ برقرار- حج سبسڈی ختم ہونے کے نتیجے میں سرینگر اور گوہاٹی کا ہوائی کرایہ سوالاکھ تک پہنچ جائے گا: مختار عباس نقوی

ممبئی/یواین آئی/ مرکزی حج کمیٹی نے حج 2018کو ’ڈیجیٹل حج‘قرار دیاہے اورآئندہ سال کی حج کے سلسلہ کی تمام سرگرمیوں کے آغاز کااعلان کل یہاں مرکزی وزیر برائے اقلیتی امور مختارعباس نقوی نے کہاکہ اس مرتبہ21روانگی مقامات کو برقرار رکھتے ہوئے عازمین حج کو سفر کے لیے متبادل بھی دیاگیا ہے اور اپنے مسلک کے تحت محرم کے بغیر خواتین کو سفر حج کی سفارش کو نافذکیا جارہاہے ۔ کل یہاں جنوبی ممبئی میں واقع حج ہاوس میں منعقدایک پرہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مختار عباس نقوی نے کہاکہ اس مرتبہ دوسے ڈھائی مہینے قبل حج کی سرگرمیوں کااعلان کرنے کا مرکزی حکومت کامقصد ہے کہ حجاج کرام کو عالمی سطح کی سہولیات فراہم کرائی جائیں۔ انہوں مزید کہاکہ فی الحال ملک بھر میں عازمین حج کی روانگی کے 21مراکز برقراررہیں گے ، لیکن ان میں سے چند ایک کے معاملہ میں متبادل کی گنجائش رکھی گئی ہے۔ممبئی ،دہلی،کولکتہ ،احمد آباد،بنگلور،چنئی اور حیدرآباد کے علاوہ سری نگر کے لیے نئی دہلی ،گوہاٹی کے بدلے کولکتہ ،ناگپور، اورنگ آباد،بھوپال اور اندور کے متبادل کے طورپرممبئی کو رکھا گیا ہے جبکہ بنارس کے عاز مین حج لکھنؤ سے جاسکتے ہیں ۔ مختارعباس نقوی نے مطلع کیا کہ حج سبسڈی ختم ہونے کے نتیجے میں سرینگر اور گوہاٹی کا ہوائی کرایہ سوالاکھ تک پہنچ جائے گا ،لیکن دہلی اور کولکتہ سے سفر کرنے کی وجہ سے کرایہ میں تقریباً 30-35ہزار روپے کی رعایت حاصل ہوگی ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں