سوائن فلو: وادی میں صورتحال سنگین نہیں دیگر امراض میں مبتلا مریض فوت ہوئے، خالص فلو وجہ نہیں

سرینگر/وادی میں سوائن فلو کی وجہ سے عوام میں پائی جارہی تشویش کے بیچ طبی ذرائع نے صورتحال کو اتنا سنگین قرار نہیں دیا ہے ،جتنا چند حلقوں میں تاثر دیا جارہاے۔ میڈیا کے چند حلقوں نے اگر چہ فلو کی وجہ سے 9افراد کے جاںبحق ہونے کی خبریں شائع کی تاہم سکمز صورہ کے ذرائع کے مطابق ہلاک ہونے والے مریضوں کی وجہ سوائن فلو کے بجائے اور بھی وجوہات ہوسکتی ہیں۔ چونکہ لمبی خشک سالی اور سردیوں کے موسم میں اگر چہ فلو کی بیماری عام رہتی ہے تاہم سرکار بالخصوص صورہ میڈیکل انسٹی چیوٹ نے اس بیماری کے شکار مریضوں کی بہتر تشخیص اور علاج ومعالجہ کے علاوہ تمام ضروری ادویات دستیاب رکھی ہیں۔ ہسپتال انتظامیہ کا کہنا ہے کہ سوائن فلو کی علامتو ں میں نزلہ ، زکام، تیزبخار اور گلے میں کھراش شامل ہیں اور خود کوئی بھی دوائی لینے کے بجائے مریضوں کو فوری طور ہسپتال جا کر ڈاکٹر سے تشخیص کرانی چاہئے تاکہ انہیں دستیاب سہولیات کی بنیاد پر بہتر تشخیص کی جاسکے اور بروقت علاج ومعالجہ فراہم کیا جاسکے۔/جاری صفحہ نمبر۱۱پر
 انہوں نے مزید بتایاکہ سردی ، زکام، گلے میں خراش اور تیز بخار ہونا ضروری نہیں کہ مریض کو سوائن فلو ہے۔ سکمز انتظا میہ نے عوام کو نہ گھبرانے کی صلاح دیتے ہوئے یقین دہانی کرائی ہے کہ ہسپتال میں اس بیماری کی تشخیص اور علاج ومعالجہ کیلئے تمام لازمی سہولیات اور ادویات دستیاب ہیں۔ انہوں نے واضح کیا کہ میڈیا کے چند حلقے غلط اعداد وشمار کی بنیاد پر عوام کو تشویش میں مبتلا کررہے ہیں جو کہ حقیقت سے بالکل بعید ہے۔ انہوں نے واضح کہ گھبرانے کے بجائے ڈاکٹری جانچ اور احتیاط سے ان بیماروں کا علاج بالکل ممکن ہے جو سوائن فلو میں مبتلا ہیں۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں