پاکستان کیلئے چاردریائوں کا پانی روک دیاگیا بھارت آبی جارحیت پر اُترآیا ،پاکستان کا الزام کہا ملک کے کئی علاقے ریگستان میں تبدیل 

اسلام آباد/پاکستان نے بھارت پر الزام عائد کیا ہے کہ سندھ طاس معاہدہ کی سنگین خلاف ورزی کرتے ہوئے بھارت نے ستلج، راوی ، بیاس کامکمل اور چناب کا 50ہزار کیوسک پانی روک لیا۔ چاروں دریاوں سے برآمد ہونے والی 90نہریں مکمل طور پر بند ہوگئیں۔ پاکستان نے واضح کردیا ہے کہ 1960ئ کی دہائی میں پاک بھارت سندھ طاس معاہدہ کے تحت دونوں ممالک میں طے پایا تھا کہ بھارت دریائے چناب میں 55ہزارکیوسک پانی چھوڑنے کا پابند ہوگا۔ جسکے برعکس بھارت نے جموں کشمیراور ہماچل پردیش میں ڈیم تعمیر کرکے ان کی سطح بڑھ نے کیلئے دریائے چناب کا پانی روک لیااورہیڈ مرالہ کے مقام پر دریائے چناب میں 55ہزار کے بجائے 5461کیوسک پانی کی آمد ریکارڈ کی جارہی ہے۔/جاری صفحہ نمبر۱۱پر
سندھ طاس معاہدے سے قبل بھارت کی طرف سے دریائے بیاس میں 12ہزار کیوسک ،دریائے ستلج میں10ہزار کیوسک اور دریائے راوی میں 15ہزار کیوسک پانی آد خریف کی فصل کی کاشت کیلئے درکار ہوتا تھا، تاہم سندھ طاس معاہد ہ کی رواور عالمی قوانین کے تحت ستلج ، بیاس اور راوی میں پائے جانے والے آبی جانوروں اور پرندوں کی زندگی کو بحال رکھنے کیلئے پانی چھوڑنا ضروری ہے۔بھارت نے عالمی قوانین کی خلاف ورزی کرتے ہوئے ستلج ،بیاس اور راوی پر ڈیم تعمیرکرکے انکامکمل طور پر پانی رو ک لیا ہے جس کے باعث مذکورہ3دریاریگستان کی صورت اختیار کر گئے اوروہاں پر پائے جانے والے آبی جانور اور پرندے ہلاک ہوچکے ہیں جبکہ دریائے چناب کیڈیم ہیڈ مرالہ،ہیڈ خانکی، ہیڈ قادر آباد، ہیڈ تریموں اور ہیڈ پنجند سے نکلنے والی نہریں خریف کی فصل کیلئے مکمل طور پر بند ہوگئی ہیں۔نہر اپر چناب میں 18ہزار کیوسک کے بجائے 4182کیوسک پانی چھوڑا جارہا ہے اور ہیڈ خانکی کے مقام پر ایل سی سی کو رواں رکھنے کے لئے دریائے جہلم سے لوئر چناب کے ذریعے پانی حاصل کیاجارہاہے۔ اسی طرح دریائے راوی، دریائے ستلج، دریائے بیاس سے برآمد ہونے والی90 کے قریب نہریں مکمل طور پر خشک سالی کا شکار ہیں جس سیپنجاب کیگوجرانوالہ ریجن ،فیصل آباد ریجن، لاہور ریجن، ملتان ریجن، بہاوپور ریجن، بہاولنگر ریجن، رحیم یار خان ریجن کی کروڑ وں ایکٹر اراضی پرخریف کی فصل کو نہری پانی دستیاب نہ ہونے کی بنائ پر کاشتکارووں کو ٹیوب ویلز کے ذریعے مہنگا ترین پانی استعمال کرنا ہوگا۔ جس سے ملک میں مہنگائی کا طوفان آئے گا۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں