ہندنواز جماعتیں اور سیاست کار کشمیریوں کے ہرظلم وجبر کیلئے ذمہ دارہمارے اسلاف نے ہمیں عزت ووقار وآزادی کیلئے جدوجہد کا ہنر سکھایا ہے:یاسین ملک

سرینگر/ہمارے اسلاف نے ہمیں زندگی کو عزت و وقار کے ساتھ گزارنے کا درس دیا ہے انہوں نے ہمیں عزت و وقار و آزادی کیلئے جدوجہد کرنے کا ہنر سکھایا ہے ۔۔ان باتوں کا اظہار لبریشن فرنٹ کے چیئرمین جناب محمد یاسین ملک نے درگاہ سلطان العارفین مخدوم صاحب/جاری صفحہ نمبر ۱۱پر
 سری نگر میں موجود عوام سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ حضرت شیخ حمزہ مخدوم رحمۃ اللہ علیہ کی سیرت پاک کا حوالہ دیتے ہوئے یاسین صاحب نے کہا کہ مخدوم(رح) صاحب کشمیریوں کی روحانی، سماجی اور الغرض زندگی کے ہر شعبے میں قیادت و سیادت کی۔انہوں نے ہمیں دین اور ایمان کی نعمت سے بہرہ مند کرنے کے ساتھ ساتھ باغیرت زندگی گزارنے،عزت و وقار کیلئے میدان عمل میں کود جانے اور سرور کائنات ö کے فرمودات کو آنکھوں کا سرمہ اور سر کاتاج بنالینے کی جانب راغب کیا۔ لیکن شومئی تقدیر کہ ہم نے اپنے ان روحانی پیروں کے فرمودات کو یکسر نظر انداز کیا اور اپنے لئے ذلت،گمراہی اور تباہ حالی مول لے لی ہے۔یاسین صاحب نے زور دے کر کہا کہ ہمارے اسلاف نے ہمیں وحدت اور اخوت کا درس دیا ہے اور جو لوگ بزرگوں اور سلف صالحین کے نام پر مسلکی فسادات کو فروغ دینے کی کوششیں کررہے ہیں وہ دین متین اور ملت قوم کشمیر کے بھی واضح دشمن ہیں۔ یاسین صاحب نے کہا کہ ایک اللہ ،ایک نبیö،ایک کعبہ‘ایک قرآن ماننے والوں کو مسلک اور گردہ کے نام پر لڑوانے والے دراصل ملت کے ازلی دشمن ہیں ۔ یاسین صاحب نے مسلمانوں پر زور دیا کہ وہ اپنے بزرگوں اور اَسلاف کے فرمودات کی روشنی میں اپنے کھوئے ہوئے دینی اور رُوحانی اقدار کی بحالی کیلئے تگ و دو کریں اور اپنے باہمی اخوت اور اتحاد کو کسی بھی صورت میں کھونے نہ دیں۔بھارت نواز کشمیری سیاست کاروں اور ان کی جماعتوں کی منافقانہ سیاست کی مذمت کرتے ہوئے جے کے ایل ایف چیئرمین نے کہا کہ حقیقت یہی ہے یہ ہند نواز جماعتیں اور سیاست کارکشمیریوں کو لاحق ہر ظلم و جبر اور غم واندوہ کیلئے ذمہ دار ہیں جو کشمیری پچھلے ۰۷ برس سے جھیل رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ بھارت نواز سیاست کار اور جماعتیںاپنے بھارتی آقائوں کی ایمائ پر جموں کشمیر میں سیاسی دغابازی کو فروغ دینے میں مصروف رہے ہیںاور بھارت ہر سال بعد رچے جانے والے ڈرامے میں ان کا کردار بدل کر ایک کو حکمرانی اور دوسرے کو اپوزیشن کا کردار تفویض کرکے جموں کشمیر پر اپنے ناجائز تسلط کو دوام بخشتا آرہا ہے۔انہوں نے کہا کہ یہ بھارت نواز سیاست دان جب اپوزیشن میں ہوتے ہیں تو انسانی حقوق اور آزادی کا شور مچاتے ہیں لیکن جیسے ہی یہ لوگ طاقت حاصل کرتے ہیں تو یہ لوگ ناجائز فوجی تسلط اور ظلم و جبر کے سرگرم ایجنٹ بن کر اپنے ذاتی،گروہی اور طبقاتی مفادات، کی تکمیل کرتے رہتے ہیں۔ پوری وادی ٔ کشمیر خاص طور پر وادیٔ کشمیر کے جنوبی اور شمالی علاقہ جات میں جاری ظلم و جبرکی سخت الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے یاسین صاحب نے کہا کہ سبز لباس اور دلفریب و گمراہ کن نعرے دے کر عام لوگوں کو دھوکہ دینے والے سیاست کاروں نے آزادی اور انسانی حقوق کے نام پر لوگوں کو فریب دیا لیکن طاقت کے حصول کے فوراً بعد ان لوگوں نے اپنا رنگ تبدیل کرکے ظلم و جبر کے ہتھیار اور ناجائز تسلط کے ایجنٹ بن کر کشمیریوں پر بے مثال مصائب ڈھانے کا کام کیا ہے جو آج کل اپنے عروج پر ہے۔ انہوں نے کہا کہ ابیا زیب تن کرنے والی یہ گرگٹ نما سیاست اب آزادی پسند کشمیریوں کے سامنے مکمل طور پر بے نقاب ہوچکی ہے اور ان شائ اللہ اب اسکا کوئی فریب جموں کشمیر کے لوگوں کو دھوکہ نہیں دے سکتا ۔انہوں نے کہا کہ وادیٔ کشمیر کا پورا جنوبی حصہ اور دوسرے جملہ علاقے آج بھارتی ظلم و جبر کا شکار ہیں۔ قتل و غارت،کریک ڈائون، گرفتاریاں ،مکانات اور گھروں کی توڑ پھوڑ،لوگوں کی مار پیٹ اور ٹارچر اور ایسے ہی دوسرے مظالم اب روز کا معمول بن چکے ہیں۔خاتون سیاست کارجنہوں نے خاص طور پر جنوبی علاقوں کے لوگوں کو آزادی اور انسانی حقوق نیز شہدائ کی لاشوں پر مگرمچھی آنسو بہا کر دھوکہ دیا آج اس بے ہنگم ظلم و جبر کی سرپرستی کررہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ۰۹ کی دہائی جیسے کریک ڈائون جن کے دوران مرد و زن، بچوں اور بزرگوں اور جوانوں کو مار پیٹا جاتا ہے، گرفتار کیا جاتا ہے، اذیت اور تذلیل کا نشانہ بنایا جارہا ہے آج جاری ہیں۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں