کنڈ قاضی گنڈ معرکے میں جنگجو جاں بحق - محاصرے میں پھنسے جنگجو ئوں اور فورسز کے درمیان گولیوں کے تبادلے میں ایک اہلکار بھی ہلاک ،دوزخمی لام ترال میں جنگجو مخالف اوپریشن ،تلاشی کارروائی کے کئی گھنٹے بعد اختتام پذیر

جنوبی کشمیر /نیازحسین /عارف وانی /کے این ایس /یو پی آئی /کنڈقاضی گنڈ میں خونین معرکہ آرائی کے دوران لشکرطیبہ کامقامی کمانڈراورایک فوجی اہلکارازجان جبکہ 2فورو سزا ہلکارزخمی ہوگئے ۔اس دوران نواحی علاقوں میں مشتعل مظاہرین اورپولیس وفورسز کے درمیان جھڑپیں ہوئیں، جس دوران کچھ افرادمضروب ہوگئے ۔پولیس ودفاعی ذرائع نے ایک مقامی جنگجواورایک فوجی کے ازجان ہونے کی تصدیق /جاری صفحہ نمبر ۱۱پر
کرتے ہوئے بتایاکہ محاصرے میں مزیدجنگجوئوں کے پھنسے ہونے کے باعث یہاں ابھی آپریشن جاری رکھاگیاہے ۔ادھر لام ترال میں فوج ،فورسزاورٹاسک فورس نے منگل کی صبح مشترکہ کارروائی شروع کی تاہم کچھ وقت بعدیہ آپریشن ختم کیاگیا۔ اس دوران جنوبی کشمیرکے چاروں اضلاع میں پورے دن موبائل انٹرنیٹ خدمات کومعطل رکھاگیا۔ قاضی گنڈ کولگام کے مضافاتی گائوں نوبُگ کنڈ میں منگلوار کو اُس وقت جنگجوئوں اور فوج وفورسز کے درمیان معرکہ آرائی کاسلسلہ شروع ہوا جب فوج وفورسز نے خفیہ اطلاع ملنے کی بنیاد پر گائوں کا محاصرہ کرلیا ۔معلوم ہوا ہے کہ 9آر آر ،ایس او جی کولگام اور سی آر پی ایف اہلکاروںنے نوبُگ گنڈ قاضی گنڈ گائوں کا منگلوار کی علی الصبح کریک ڈائون کرکے جنگجو مخالف آپریشن شروع کردیا ۔ذرائع کے مطابق فوج وفورسز کو اطلاع ملی تھی کہ گائوں میں مسلح جنگجوئوں کا ایک گروپ موجود ہے اور اطلاع ملتے ہی فوج وفورسز نے گائوں کو چاروں اطراف سے سیل کردیا اور گائوں کے داخلی وخارجی راستے بند کردئیے ۔کریک ڈائون کا اعلان بھی کیا گیا اور لوگوں سے کہا گیا کہ وہ گھروں کے اندر ہی رہیں ۔ذرائع کا کہنا ہے کہ فوج وفورسز نے گائوں میں تلاشی کارروائیوں کا سلسلہ کرتے ہوئے اُس مقام تک پہنچنے کی کوشش کی ،جہاں پر جنگجو موجود تھے ۔معلوم ہوا ہے کہ جونہی فوج وفورسز کی ایک پارٹی اُس مقام کے نزدیک پہنچی ،جہاں پر جنگجو موجود تھے یا انہوں نے پناہ لی تھی ،نے فورسز پارٹی پر اند ھا دھند فائرنگ کی ،جسکے ساتھ ہی یہاں فوج وفورسز کے درمیان شدید گولیوں کا تبادلہ شروع ،جس نے خونین معرکہ آرائی کی شکل اختیار کی ۔معلوم ہوا ہے کہ جنگجوئوں اور فوج وفورسز کے درمیان ابتدائی گولیوں کے تبادلے کے دوران فوج کا ایک اہلکار اور ایک جنگجو ازجان ہوا ۔بعض رپورٹس کے مطابق معرکہ آرائی کے دوران ایک فوجی اور ایک ایس او جی اہلکار بھی زخمی ہوا ۔ایک رپورٹ کے مطابق فوج کے ترجمان کرنل آر کے پانڈے نے بتایا کہ کنڈ کولگام میں جھڑپ کے دوران فوج کو جانی نقصان کا سامنا کرنا پڑا ۔انہوں نے کہا کہ ملی ٹنٹوں کے ساتھ جھڑپ میں ایک فوجی اہلکار ازاجان ہوا ۔ادھرحزب المجاہدین کے اوپریشنل ترجمان برہان الدین نے ایک ٹیلی بیان میں جاں بحق جنگجو کو خراج عقیدت پیش کیا ۔انہوں نے ہندوارہ اور کولگام میں حزب المجاہدین اور لشکر طیبہ سے وابستہ جاںبحق جنگجو ئوں کو خراج پیش کر تے ہوئے جہا د کونسل کے سربراہ سید صلاح الدین کے حوالے سے بتایا کہ نوجوان اسلام کی سر بلندی اور کشمیر کی آزادی کے لئے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کررہے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ ہندوارہ جھڑپ میں جاں بحق جنگجو طیب ساکنہ سوپور اور عاشق ساکنہ پلہالن حزب المجاہدین سے وابستہ ہیں جبکہ کولگام کا جاں بحق جنگجوتعلق لشکر طیبہ سے وابستہ تھا ۔ادھر اطلاعات کے مطابق جھڑپ کے دوران قاضی ،کنڈ ،میر بازار ،پہلو،سپوتھ دیو سر اور اننت ناگ ۔کولگام شاہراہ کے دیگر کئی مقامات پر نوجوانوں کی ٹولیاں نمودار ہوئیں ،جنہوں نے انکائونٹر مخالف مظاہرے کئے ۔کئی مقامات پر نوجوانوں نے مشتعل ہو کر فورسز پر شدید پتھرائو بھی کیا ۔ادھر پولیس کے مطابق لام ترال میں جنگجوئوں اور فوج وفورسز کے درمیان گولیوں کا تبادلہ ہوا ۔ذرائع کا کہنا ہے کہ 42آر آر ،ایس او جی اونتی پورہ کے اہلکاروں نے ترال کے جنگلی علاقے لام کا محاصرہ کیا ۔فورسز کو اطلاع ملی تھی کہ یہاں جنگجو موجود ہے اور اِسی اطلاع کی بنیاد پرفوج وفورسز نے یہاں تلاشی کارروائیوں کا سلسلہ شروع کردیا ۔تاہم نمائندے نے ذرائع کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا کہ تلاشی کارروائی کے دوران فورسز نے یہاں جنگجوئوں کی ایک کمین گاہ پائی اور یہ آپریشن بعد میں ختم کردیا گیا ۔ò

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں