گورنر کا ریاستی قانون سازیہ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب،  سماج کے سبھی طبقوں کو مذاکرات کیلئے آگے آنے اور معاملات کا حل نکالنے کی ضرورت پر زور دیا

 جموں /ریاست کے گورنر این این ووہر نے کل ریاستی قانون سازیہ کے بجٹ اجلاس۔2018 کے پہلے دن دونوں ایوانوں کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کیا۔ اپنے خطاب میں گورنر نے کہا کہ معاشرے کے بعض طبقوں میںخدشات کے ازالہ کیلئے ہمیں اپنے کھوئے ہوئے اعتماد کو پھر سے حاصل کرنے کی ضرورت ہو گی۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں2016ئ کے واقعات سے سبق سیکھنا چاہئے اور نظر اندازاور درکنار زمروں کے مفادات سے تعلق رکھنے والے معاملات پر اپنی توّجہ مرکوز کرنا چاہئے۔ایسی حساسیت حکومت کے حالیہ پالیسی اقدامات میں پہلے ہی سے عیاں ہے اور اُمید ہے کہ وقت کے ساتھ ساتھ مناسب پالیسیاں ریاست کو پائیدار اَمن اور ترقی کی راہ پر گامزن کریں گی۔ این این ووہرا نے کہا کہ گزشتہ کئی مہینوں سے ہمارے سیکورٹی فورسز نے دہشت گرد مخالف چنندہ کاروائیاں کامیابی کے ساتھ انجام دی ہیں۔جس وقت ایسی کاروائیاں سر انجام دینامطلوب ہوں،اُمید کی جاتی ہے کہ بے قصور لوگوں کے جان و مال کا کم سے کم ممکنہ نقصان یقینی بنایا جائے گا۔ گورنر نے کہا کہ حکومت اُن نوجوانوں جن کو پیلٹ سے زخم لگے ہیں کی بینائی سے معذوری کو سنجیدگی سے لیتے ہوئے اور اُن کی تکالیف کی شّدت کو ممکنہ طور کم کرنے کے لئے مذکورہ نوجوانوںکی با زآبادکای کی خاطر کوشاں ہے۔ گورنر نے کہا کہ ریاست میں 5میڈیکل کالجوں کی منظوری دی گئی ہے۔ جموں ڈویژن میں کٹھوعہ، ڈوڈہ اور راجوری اور کشمیر ڈویژن میں بارہمولہ اور اننت ناگ ۔ جبکہ تین نئے میڈیکل کالجوں پر بھی کام سرعت سے جاری ہے۔ریاست میں دیگر دو میڈیکل کالجوں کے قیام کی شروعات کی گئی ہے۔تمام پانچ میڈیکل کالجوں کی خاطر عملے کیلئے منظوری دی جا چکی ہے اور توقع ہے کہ یہ میڈیکل کالج سال 2019تک صحت اور طبّی خدمات بہم پہنچانے کی شروعات کریں گے۔اس سے ایم بی بی ایس سیٹوں کی موجودہ تعداد500سے 1000ہو جائے گی۔ گورنر نے کہا کہ 120کروڑ روپے کی لاگت سے دو سٹیٹ کینسر انسٹی چیوٹ قائم کرنے کی منظوری دی جا چکی ہے۔ جن میںSKIMSصورہ ،سرینگر میں ایک اور GMC،جموں میں ایک شامل ہے۔ کشمیر کیلئے سٹیٹ کینسر انسٹی چیوٹ کی توثیق کی جا چکیہے اور سکمز صورہ، سرینگر میں انسٹی چیوٹ قائم کرنے کے مقصد سے پہلی قسط کے طور 47.25کروڑ روپے کی رقم واگذار کی جا چکی ہے۔ضلع سطح پر کینسر نگہداشت سہولیات کو مزید مضبوط بنانے کیلئے مرکزی حکومت نے اُ دہمپور ، کشتواڑ اورکپواڑہ کے تین ضلع ہسپتالوں میں Tertiary Cancer Care Centres (TCCC)منظور کئے ہیں ۔ گورنر نے کہا کہ کشمیر ی مائیگرنٹوں کی واپسی اور باز آبادکاری کے لئے وزیراعظم پیکیج کلیدی نوعیت کی ایک پہل ہے جس کا مقصد کشمیری مائیگرنٹ کنبوں کی با عزت کشمیر واپسی کو یقینی بنانا ہے ۔پروگرام کے تحت 2017-18 میں مختلف محکمہ جات میں 3000 اضافی اسامیاں معرض وجود میں لائی گئیں۔3000 اسامیوں میں سے 2575 متعلقہ بھرتی ایجنسیوں کو سونپی گئی ہیںجن کو بہت جلد پُرکیا جائے گا۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں