روہنگیاامداد کے باوجود غذائی قلت کے شکار ہیں : اقوام متحدہ

ڈھاکہ/ اقوام متحدہ کی حالیہ اسٹڈی میں پتہ چلا ہے کہ بنگلہ دیش میں حال میں آئے 90 فیصد روہنگیا پناہ گزین ہنگامی غذائی امداد ملنے کے باوجود غذائی قلت کے شکار ہیں۔ اقوام متحدہ کے نائب ترجمان فرحان الحق نے بتایا کہ ورلڈ فوڈ پروگرام ﴿ڈبلیو ایف﴾ روہنگیا ہنگامی خطرات کے جائزہ اور کھانے کی سیکورٹی سیکٹر کے معاونین نے گزشتہ سال نومبر اور دسمبر میں اچھے اور متفرق متوازن غذا کی محدود رسائی پر تشویش ظاہر کی تھی۔ مسٹر حق نے کہا تقریباً 90ہزار لوگوں کو ڈبلیو ایف پی کے ای واؤچر پروگرام سے جوڑا گیا ہے ، جس کے تحت انہیں پری پیڈ ڈیبٹ کارڈ دیا جاتا ہے ۔ اس کارڈ میں دستیاب فنڈز سے چاول، تازہ سبزیاں، انڈے ، خشک مچھلی سمیت کئی طرح کے کھانے کی اشیا خرید سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ نئے آنے والے پناہ گزینوں کے لئے ڈبلیو ایف کا کھانے کی تقسیم کے پروگرام بڑھایا جائے گا، جس سے انہیں چاول، تیل اور دال مل سکے ۔ یہ بنیادی کیلوری دینے کے لئے ہنگامی ترسیل کا نظام ہے ، لیکن اس غذا میں تنوع کی کمی ہے ۔اسٹڈی کے مطابق ذریعہ معاش سپورٹ پروگرام کو بڑھانے کی سفارش کی گئی ہے ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں