کھڈونی کولگام میں مظاہروں کے دوران 20سالہ نوجوان گولی لگنے سے جاں بحق وزیراعلیٰ کا اظہار افسوس ، تحقیقات کا حکم دیا

سرینگر/نیازحسین/یو پی آئی/کھڈونی کولگام میں 20سالہ نوجوان گولی لگنے کے نتیجے میں جاں بحق ہوا ہے۔ مقامی لوگوں کے مطابق جھڑپوں کے دوران فورسز اہلکاروں نے فائرنگ کی جس کے نتیجے میں نوجوان کی موت واقع ہوئی ۔ پولیس ذرائع کے مطابق ایک نوجوان کی موت واقع ہوئی ہے ، اس سلسلے میں تفصیلات حاصل کی جار ہی ہیں۔بق لارنو کوکر ناگ میں مقامی جنگجو کی موت واقع ہونے کی افواہ پھیلتے ہی کھڈونی کولگام میں لوگوں نے سڑکوں پر آکر احتجاجی مظاہرئے کئے جس دوران سیکورٹی فورسز اور مظاہرین کے درمیان جھڑپوں کا سلسلہ شروع ہوا۔ نمائندے نے مقامی لوگوں کا حوالہ دیتے ہوئے کہاکہ 20سالہ خالد ڈار ساکنہ کھڈونی گولی لگنے سے زخمی ہوا اگر چہ اُس کو فوری طورپر ضلع اسپتال کولگام منتقل کیا گیا تاہم ڈاکٹروں نے اسے مردہ قرار دیا ۔ اسپتال ذرائع کے مطابق نوجوان کے سینے میں/جاری صفحہ نمبر۱۱پر
گولی پیوست ہوئی تھی جس کے نتیجے میں اُس کی موت واقع ہوئی ۔ نمائندے کے مطابق لارنو کو کر ناگ میں دو جنگجوئوں کی ہلاکت کی خبر پھیلتے ہی سوشل میڈیا پر افواہیں پھیلائی گئی کہ دونوں کولگام ضلع سے تعلق رکھتے ہیں جس کے ساتھ ہی کھڈونی کولگام میں نوجوانوں اور فورسز کے درمیان جھڑپیں ہوئیں جس دوران سیکورٹی فورسز نے فائرنگ کی جس کے نتیجے میں ایک نوجوان کی موت واقع ہوئی ۔ اس ضمن میں جب کولگام پولیس کے ساتھ رابط قائم کیا تو اُن کا کہنا تھا کہ کولگام میں ایک نوجوان گولی لگنے کے نتیجے میں جاں بحق ہوا ہے۔ پولیس ذرائع کے مطابق ابھی تک یہ معلوم نہیںہو سکا کہ نوجوان کو کیسے گولی لگی ہیں۔ ادھروزیراعلیٰ محبوبہ مفتی نے کھڈونی میں جھڑپوں کے دوران خالد حسین ڈار کی گولی سے ہلاک پر افسو س کا اظہار کیا ، انہوں نے ضلع انتظامیہ کو اس نوجوان کی ہلاکت کے بارے میں تحقیقات کا حکم دیا، جس پر ڈپٹی کمشنر نے فوری طور پر ایڈیشنل کمشنر کو تحقیقاتی آفیسر مقرر کیا ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں