سکمز کے معاملات کو عنقریب حل کیا جائے گا لازمی خدمات خوش اسلوبی سے جاری :وزیر صحت

جموں /صحت و طبی تعلیم کے وزیر بالی بھگت نے قانون ساز اسمبلی کو جانکاری دی کہ حکومت شیر کشمیر انسٹی چیوٹ آف میڈیکل سائنسز میں جاری ہڑتال کو ختم کرنے کے لئے لازمی اقدامات کر ے گی۔اسمبلی میں ایم وائی تاریگامی اور میاں الطاف کی طرف سے اس حوالے سے اُبھارے گئے نکتے کے تناظر میں وزیر موصوف نے کہا کہ حکومت نے سکمز کے تین سینئر فیکلٹی ممبران کو معطل کردیا ہے اور اس کے ڈائریکٹر کو رہنما خطوط کی خلاف ورزی کرنے کی پاداش میں جی اے ڈی کے ساتھ اٹیچ کیا ہے۔انہوں /جاری صفحہ نمبر۱۱پر
نے کہاکہ سکمز قوانین کے مطابق کوئی بھی ڈاکٹر پرائیویٹ پریکٹس نہیں کرسکتا ہے کیونکہ انہیں نان پریکٹائزنگ الائونس دیا جاتا ہے ۔وزیر نے کہا کہ ان ڈاکٹروں کو قوانین کی خلاف ورزی کرتے ہوئے پرائیویٹ پریکٹس کرتے ہوئے پایا گیا اور حکومت نے ان کے خلاف تادیبی کارروائی عمل میں لائی۔وزیر نے سکمز میں جاری ہڑتال کی وجہ سے طبی خدمات میں ہو رہے خلل کے پیش نظر ارکان کی تشویش کی ستائش کرتے ہوئے کہا کہ تمام لازمی خدمات بشمول او پی ڈی اور سرجریز معمول کے مطابق جاری ہے ۔انہوں نے ایوان کو یقین دلایا کہ حکومت طبی خدمات میں رکاوٹیں درپیش نہیں آنے دے گی اور اس معاملے کو جلد ہی حل کیا جائے گا۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں