سوپور میں حزب المجاہدین اور جیش محمد کا مشترکہ نیٹ ورک بے نقاب 2جنگجو اور 9بالائی زمینی ورکر ڈرامائی انداز میں گرفتار ، کچھ اسلحہ بھی ضبط :پولیس

سوپور/جی ایم سوپوری /عابد نبی /کے ایم این /اے پی آئی /سوپور پولیس نے فوج اور سی آر پی ایف کے ساتھ مل کر حزب المجاہدین اور جیش محمدکے مشترکہ نیٹ ورک کو بے نقاب کرتے ہوئے 2سرگرم جنگجوئوں اور9بالائے زمین کارکنوں کو گرفتار کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔پولیس کا کہنا ہے کہ گرفتار شدگان میں سے بعض کا تعلق جنوبی کشمیر سے ہے جو نوجوانوں کو ملی ٹینسی کی طرف راغب کرنے کے کام پر مامور تھے اور ان کی تحویل سے اسلحہ و گولی بارود سمیت کچھ قابل اعتراض مواد بھی برآمد کرلیا گیا ہے۔پولیس نے یہ بھی بتایا کہ سوپور بیلٹ میں فی الوقت15سے20جنگجو سرگرم ہیں۔/جاری صفحہ نمبر۱۱پر
 اس سلسلے میں ایس ایس پی سوپورڈاکٹر ہرمیت سنگھ مہتا نے منگل کو ایک پریس کانفرنس سے خطاب کیا جس دوران گرفتار شدگان کو بھی میڈیا کے سامنے پیش کیا گیا۔انہوں نے دعویٰ کیاکہ سوپور اور اس کے مضافاتی علاقوں میں سرگرم حزب المجاہدین اور جیش محمد کے جن جنگجوئوں اور گرائونڈ ورکروں کو حراست میں لیا گیا ، وہ نہ صرف ضلع میں تنظیم کیلئے عسکری سرگرمیاں انجام دے رہے تھے بلکہ نوجوانوں کو ملی ٹینسی میں شامل ہونے کی طرف راغب کرنے کا کام بھی کرتے تھے ۔ایس ایس پی بتایا کہ رواں ماہ کی7تاریخ کو رات دس بجے پولیس ، فوج کی22آر آر،MARCOS اور سی آر پی ایف سے وابستہ اہلکاروں نے مشترکہ کارروائی کے دوران وٹلب علاقے کو محاصرے میں لیا جہاں جنگجوئوں کے موجود ہونے کی مصدقہ اطلاع موصول ہوئی تھی۔ہرمیت سنگھ کا کہنا تھا کہ اس دوران ایک اسکول کے نزدیک چھپے4 افراد کو مشتبہ حالت میں دیکھتے ہی گرفتار کیا گیا۔ان کا کہنا تھا کہ ان میں سے ایک نے فورسز پر گولی چلانے کی کوشش بھی کی لیکن فورسز اہلکاروں نے اسے دبوچ لیا۔گرفتار شدگان میں مشتاق احمد چوپان عرف ہارون ولد غلام محمد ساکن واگڈ ترال، شجاع الدین شیخ ولد غلام محی الدین ساکن ڈادہ سرہ ترال، ارشاد احمد لون ولد عبدالرشید ساکن سیر ترال اور حمیض ساکن کپوارہ شامل ہیں۔ایس ایس پی کے مطابق مشتاق احمد اور شجاع الدین شیخ حزب المجاہدین کے سرگرم جنگجو ہیں، مشتاق کے قبضے سے ایک اے کے47رائفل، ایک میگزین اور گولیوں کے15رائونڈ برآمد ہوئے، شجاع الدین کی تحویل سے ایک پستول ، میگزین، تین گولیاں ، ایک گرینیڈ جبکہ ارشاد احمدسے ایک ہتھ گولہ برآمد ہوا۔ انہوں نے مزید کہا کہ گرفتار شدگان کے خلاف ایف آئی آر زیر نمبر10018زیر دفعہ7/25آرمز ایکٹ درج کرکے تحقیقات شروع کی گئی۔ہرمیت سنگھ نے بتایا کہ دوران تحقیقات اس نیٹ ورک میں شامل مزید کئی لوگوں کے نام سامنے آئے جو حزب المجاہدین اور جیش محمدکیلئے کام کرتے تھے۔ انہوں نے کہا کہ گرفتار جنگجو جنوبی کشمیر سے شمالی کشمیر صرف اس غرض سے آئے تھے کہ مقامی نوجوانوں کو جنگجو تنظیموں میں شامل کیا جائے۔انہوں نے کہا کہ یہ لوگ حزب کمانڈر ریاض نائیکو اور جیش کمانڈر علی اور قاسم کی ہدایات پر کام کرتے تھے۔ان کا کہنا تھا کہ بعد میں پولیس اور فورسز نے مشترکہ کارروائیوں کے دوران دونوں تنظیموں کیلئے کام کرنے والے مزید7اوور گرائونڈ ورکروں کو بھی گرفتار کیا۔کے ایم این کے مطابق ایس ایس پی نے ان کے نام تجمل الاسلام شاہ ولد محمد مقبول ساکن ڈانگر پورہ سوپور، سید تمیز الدین ولد سید محی الدین ساکن ڈانگر پورہ، غلام نبی میر ولد محمد اکبر اقبال نگر سوپور، مدثر احمد میر ولد محمد اکبر اقبال نگر، سلیم احمد بیگ ولد مشتاق احمد ساکن شیخ صاحب سوپور، مزمل احمد گنائی ولد غلام حسن صاحب سوپور اور شوکت احمد کبو ولد علی محمد ساکن آرمپورہ سوپور کے بطور ظاہر کئے ۔پولیس آفیسر نے ان کی تحویل سے قبل اعتراض دستاویزات، دونوں تنظیموں کے لیٹر پیڈ،پوسٹر ، بھرتی فارم اور کئی موبائیل فون برآمد کرنے کا دعویٰ کیا ۔ان کا کہنا تھا کہ معاملے کی مزید چھان بین جاری ہے اور گرفتار شدگان کے مزید ساتھیوں کا پتہ لگانے کی کوشش کی جارہی ہے۔ایک سوال کے جواب میں ہرمیت سنگھ مہتا نے کہا کہ سوپور بیلٹ میں فی الوقت15سے20جنگجو سرگرم ہیں۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں