عمر صاحب اپوزیشن میں ہیں وہاں ایسی باتیں کرنی ہی پڑتی ہیں- لوگوں کو پتہ ہے کہ کس کی وراثت کیا ہے وہ ہماری وراثت کے بارے میں فکر نہ کریں

جموں/یو این آئی/ پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی ﴿پی ڈی پی﴾ کے سینئر لیڈر ، ریاستی وزیر اور حکومتی ترجمان نعیم اختر نے کہا ہے کہ کشمیری جنگجوؤں کی واپسی کے لئے ایک ایسا ماحولیاتی نظام تیار کیا گیا ہے جس میں وہ ایک باعزت زندگی/جاری صفحہ نمبر۱۱پر
 گذر بسر کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ پہلے خودسپردگی اختیار کرنے والے جنگجوؤں کو انفارمر بنایا جاتا تھا لیکن اب ویسی بات نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ کشمیری جنگجوؤں کے لئے واپسی کی راہیں کھلی ہیں۔ نعیم اختر نے منگل کو یہاں ریاستی قانون ساز اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر عمر عبداللہ کی تقریر جس میں انہوں نے جنگجوؤں کی تعداد میں اضافے کے لئے حکومت کو ذمہ دار ٹھہرایا، پرنامہ نگاروں کے سوالات کا جواب دیتے ہوئے کہا ’لوگوں کو پتہ ہے کہ کس کی وراثت کیا ہے۔ وہ ہماری وراثت کے بارے میں فکر نہ کرے۔ عمر صاحب اپوزیشن میں ہے، وہاں ایسی بات کرنی ہی پڑتی ہے۔ اس وقت بنیادی ایشو یہ بنایا گیا ہے کہ نوجوان جنگجوؤں کی صفوں میں شمولیت اختیار کررہے ہیں۔ پہلے تو سینکڑوں اور ہزاروں کی تعداد میں جاتے تھے۔ ہم نے ان کے لئے ایک باعزت راستہ تیار کیا ہے۔ وہ واپس آجائیں گے تو ہم نے ان کے لئے ایک ایسا ماحولیاتی نظام تیار کیا ہے جس میں وہ ترقی کرسکیں گے۔ جس میں وہ زندہ رہیں گے اور سماجی کا ایک باعزت حصہ بنیں گے‘۔ انہوں نے کہا ’پہلے کیا ہوتا تھا کہ جب کوئی سرینڈر کرتا تھا تو اسے انفارمر بنایا جاتا تھا۔ اخوانی بنایا جاتا تھا۔ اب ویسی بات نہیں ہے۔ اسی ماحول کے نتیجے میں جنگجوؤں کے کنبوں کی حوصلہ افزائی ہوئی ہے۔ وہ اپنے بچوں سے کہتے ہیں کہ وہ واپس آجائیں۔ جو بچے بڑی کاروائیوں میں ملوث نہیں رہے ہیں، ان کے لئے راہیں کھلی ہیں۔ ان کو چاہیے کہ وہ کوئی بڑی کاروائی انجام نہ دیں اور واپس چلے آئیں۔ ان کو ہم اپنے دلوں میں جگہ دیں گے۔ یہ بات عمر صاحب کو کہنی چاہیے تھی۔ اس وقت بچوں کے واپس آنے کا ماحول بن رہا ہے۔ ہم نے پتھربازی کی وارداتوں میں ملوث بچوں کا کیریئر ٹھیک کیا ہے۔ ان سے ایسا ہوا نہیں‘۔ یو این آئی

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں