دلی میں شہر خاص کے نواجون کی گرفتاری پر حریت (ع) برہم

سرینگر//(آفتاب ویب ڈیسک ) حریت (ع) نے دلی پولیس اور گجرات انٹی ٹیررازم سکارڈ کی جانب سے سرینگر کے نوجوان بلال احمد کاوا کی گرفتار کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ موصوف ایک کاروباری شخص ہے اور اسے 26جنوری کے موقعے پر گرفتار کرکے بلی کا بکرا بنادیا گیا ہے۔اس ضمن میں موصولہ بیان میں حریت کانفرنس (ع)نے موصوف کی فوری اور بلا مشروط رہائی پر زور دیتے ہوئے کہا کہ بھارتی فورسز پولیس اور اس کی ایجنسیاں جموںوکشمیر اور بھارت کی مختلف ریاستوں میں کاروبار، روزگار اورحصول تعلیم وغیرہ کے ضمن میںمقیم بلا امتیاز کشمیری نوجوانوں ، تاجروں اور شہریوںکو گرفتار کرنے اور انہیں تنگ و طلب کرنے کی ایک منصوبہ بند پالیسی پر عمل پیرا ہیں اور انہیں محض کشمیری ہونے کی بنا پر سزا دی جاتی ہے جو انتہائی تشویشناک اور فکرمندی کا سبب ہے ۔حریت کانفرنس (ع)نے بلال کاوا کے اہل خانہ اور لواحقین کے ساتھ ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے ان کے پُر امن احتجاج اور موصوف کی رہائی کے مطالبے کی حمایت کرتے ہوئے کہا کہ بلا ل احمد کاوا جو ایک تاجر پیشہ انسان ہیں انہیں دانستہ طور پر اُسے جرم بے گناہی کی پاداش میں پھنسانے کی کوشش کی جارہی ہے ، کو فوری طور پررہا کیا جائے۔اس دوران حریت(ع) ترجمان نے حکمرانوں کی جانب سے ایک بار پھر شہر خاص کے بیشتر علاقوں میں کرفیو ، قدغنوں اور بندشوں کے نفاذ ،لوگوں کے نقل و حمل کو مسدود کرنے اور حریت چیرمین میرواعظ محمد عمر فاروق کی گزشتہ شام سے خانہ نظر بندی کیخلاف سخت برہمی اور شدید ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ان روایتی ہتھکنڈوں سے نہ تو ماضی میں مبنی برحق جدوجہد کے تئیں وابستگی کے حوالے سے قیادت اور عوام کے عزم کو کمزور کیا جاسکا ہے اور نہ ہی مستقبل میں ایسا ممکن ہے ۔
مزید دیکهے

متعلقہ خبریں