مقبول بٹ کی برسی کے سلسلے میں  کشمیر اور بیرون کشمیر پروگرام منعقد

سری نگر/شہید بابائے قو م محمد مقبول(رح) بٹ کی جدوجہد و قربانیاں دنیا بھر کی مظلوم و مقہور اقوام و ملل کیلئے مشعل راہ ہیں ۔ ان کی ذات ناجائز تسلط اور جبر کے خلاف ہماری تحریک مزاحمت کا بنیادی ستون ہے۔ ان باتوں کا اظہار لبریشن فرنٹ نے 11/ فروری ‘ یوم مقبول(رح) کے سلسلے میں جاری اپنے ایک بیان میں کیا ہے۔ قائد ِ بے لوث کے ۴۳ ویں یوم شہادت پر جاری کئے گئے ایک بیان میں لبریشن فرنٹ کے محبوس چیئرمین محمد یاسین ملک نے کہا کہ شہید بابائے قوم کی تابناک زندگی کا ہر ہر پہلو ہمارے لئے نشان راہ ہے اور یہ قوم اپنے عظیم قائد کی قربانیوں کو کسی بھی صورت میں فراموش یا نظر انداز نہیں کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ شہید قائد کو تختہ دار پر لٹکا کر بھارت اس گمان باطل میں تھا کہ اُس نے کشمیریوں کی تحریک آزادی و مزاحمت کو کچل دیا ہے لیکن ایسا کرتے ہوئے بھارت شہید کی ابدی حیات کے تصور کو بھو ل گیا ۔انہوں نے کہا کہ شہید مقبول(رح) کی شہادت نے کشمیر کے ہر گھر اور ہر محلے سے نئے مقبول پیدا کئے جو آج بھی کشمیر کی وادیوں ، جنگلوں ،شہروں اور گائوں جات کے اندر اپنا لہو بہا کر مشعل آزادی کو فروزاں رکھے ہوئے ہیں۔ یاسین ملک نے کہا کہ جس تحریک کے پودے کو مخلص شہدائ کے لہونے سیراب کیا ہو اُسے دنیا کی کوئی بڑی سے بڑی طاقت مضحمل و مفقود نہیں کرسکتی۔
 اور آج بابائے قوم کو یاد کرتے ہوئے ہم اپنے اس عہد کا اعادہ کرتے ہیں کہ اُن کے مشن کو پایہ ٔ تکمیل تک پہنچانے کیلئے کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کیا جائے گا،بابائے قوم شہید محمد مقبول(رح) بٹ کے ۴۳ ویں یوم شہادت کے حوالے سے آج جہاں دنیا بھر میں کشمیری تقریبات اور پروگرام منعقد کرچکے یا کررہے ہیں وہیں پرکشمیر کے اندر بھی عوام لناس نے اس دن کی مناسبت سے اپنے جذبات و احساسات کا برملا اظہار کیا۔ پوری وادی میں یوم مقبول کے سلسلے میں مشترکہ مزاحمتی قیات کی اپیل پر مکمل اورمثالی ہڑتال کی گئی جبکہ سخت ترین کرفیو اور جبر کے باوجود لال چوک سرینگر میں ایک شاندار احتجاجی ریلی کا بھی انعقاد کیا گیا جس دوران متعدد قائدین و اراکین جن میں شوکت احمد بخشی، نور محمد کلوال، مشتاق اجمل، محمد یاسین بٹ، شیخ عبدالرشید، بشیر احمد کشمیری، علی محمد بٹ، امتیاز احمد ڈار، فیاض احمد لون، بشارت احمدقابل ذکر ہیںگرفتار بھی کرلئے گئے ۔ اس کے علاوہ بابائے قوم شہید محمد مقبول(رح) بٹ کے آبائی گائوں ترہگام کپوارہ جسے فورسز نے کرفیو لگاکر سیل کردیا تھا میں بھی کئی شاندار پروگرام منعقد کئے گئے۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں