سنٹرل جیل میں این آئی اے کا کریک ڈائون حریت لیڈر ہلال وار نے انتقام گیری قرار دی

 سینٹرل جیل میں این آئی اے کریک دائون کوانتقام گیری کی انتہائ قراردیتے ہوئے حریت﴿ع﴾لیڈرانجینئرہلال احمدوارنے کہاہے کہ تلاشی کے بہانے قیدیوں کوطرح طرح سے ہراساں وپریشان کیاگیا۔پارٹی چیئرمین انجینئرہلال وارجنہیں سنیچرکے روزشوپیان جاتے ہوئے پولیس نے کئی مزاحمتی کارکنوں سمیت سونہ وارسرینگرمیں گرفتارکیاتھا،کومنگل کے روزسینٹرل جیل سری نگرسے رہاکیاگیا۔رہائی کے بعدانجینئرہلال احمدوارنے اتوارکے روزسینٹرل جیل سری نگرمیں قومی تفتیشی ایجنسی این آئی اے کی جانب سے عمل میں لائی گئی تلاشی کارروائی کی آنکھوں دیکھی بیان کرتے ہوئے بتایاکہ جیل میں ایام اسیری کاٹ رہے قیدیوں کومختلف طریقوں سے ہراساں اورپریشان کیاگیا۔انہوں نے کہاکہ یہ سیاسی انتقام گیری کی انتہاہے کہ جیل میں قیدیوں کوڈرایادھمکایاجائے۔پی پی پی چیئرمین نے اپنے بیان میں مزیدکہاکہ اتوارکوصبح5بجے سے شام4بجے تک این آئی اے کاکریک ڈائون جاری رہاجبکہ اس دوران سینٹرل جیل کی حدودمیں ڈرون بھی پروازکرتے رہے ۔انہوں نے کہاکہ جس بیرک میں لشکرکمانڈرنویدجاٹ بندتھا،اُس بیرک کے قیدیوں کیساتھ انتہائی غیرانسانی سلوک کیاگیا۔
پی پی پی چیئرمین کے بقول جیل کے اندرجنگ جیساماحول تھا،اورسبھی قیدی سخت ہراساں تھے ۔انہوں نے کہاکہ یہ بھی انتقام گیری کاایک منصوبہ بندطریقہ ہے کہ جیل قوانین کوبالائے طاق رکھ کرکشمیری نظربندوں کوہراساں کیاجائے

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں