لوک سبھا میں مسلسل س اتویں دن بھی وقفہ سوالات نہیں ہوا

نئی دہلی/ 13 مارچ ﴿یواین آئی﴾ لوک سبھا میں حزب اختلاف کی پارٹیوں نے اپنے اپنے مطالبات کو لے کر آج مسلسل ساتویں دن بھی جم کر ہنگامہ کیا جس کی وجہ سے وقفہ سوالات نہیں ہوسکا اور ایوان کی کارروائی 12 بجے تک ملتوی کر دی گئی۔ اسپیکر سمترا مہاجن نے جیسے ہی ایوان کی کارروائی شروع کی تلگودیشم پارٹی اور وائی ایس آر کانگریس کے رکن آندھرا پردیش کو خصوصی ریاست کا درجہ دیئے جانے ، انادرمک کے رکن کاویری پانی تنازعہ معاملہ، تلنگانہ راشٹر سمیتی کے رکن ریاست میں ریزرویشن کا کوٹہ بڑھانے اور کانگریس رکن بینک گھوٹالے اور نیرومودی، للت مودی وجے مالیہ کے فرار ہونے کے معاملہ پر نعرے بازی کرتے ہوئے اسپیکر کے سامنے آ گئے ۔ مسلم لیگ، راشٹریہ جنتا دل وغیرہ کے رکن بھی ایوان کے وسط میں آ گئے ۔ اسپیکرنے وقفہ سوالات شروع کر نے کی اجازت دی اور جیسے ہی بی جے پی کے رکن بھیرو ں پرساد مشرا کے سوال پر زراعت کے وزیر پرشوتم روپالا نے جواب دینا شروع کیا تب ہی شور شرابا بڑھ گیا۔ شور وغل کے درمیان ا سپیکرنے تقریبا تین منٹ بعد ایوان کی کارروائی 12 بجے تک ملتوی کرنے کا اعلان کر دیا۔ بجٹ سیشن کے دوسرے مرحلے میں اپوزیشن پارٹیوں کے بھاری ہنگامے کی وجہ سے لوک سبھا میں وقفہ سوالات مسلسل ساتویں دن نہیں ہو سکا۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں