دولت مشترکہ کی وراثت اختلافات کو دور کرنے میں مددگار:ملکہ برطانیہ

لندن/13 مار چ﴿یو این آئی﴾ برطانیہ کی ملکہ معظمہ ایلزابیتھ دوئم نے کہا ہے کہ دولت مشترکہ سے ہمیں جو تجربات حاصل ہوئے ہیں وہ قابل قدر ہیں اور مشترکہ وراثت سے ہمیں اختلافات کو دور کرنے میں مدد ملتی ہے اسلئے تکثیریت تقسیم کے بجائے مسرت کا باعث ہے ۔ یوم دولت مشترکہ کے موقع پر اپنے پیغام میں ملکہ معظمہ نے کہا کہ اپنی زندگیوں کو ثروت مندبنانے کے لئے ہم نے دوسروں کے تجربات سے جو کچھ سیکھا ہے اس کے لئے وہ شکریہ کے مستحق ہیں اور ہمیں مشترکہ مستقبل کیلئے ایک دوسرے کے ساتھ مل کر کام کرنے کی ضرورت ہے ۔ ملکہ ایلزابیتھ دوئم نے اپنے پیغام میں مزید کہا ہے کہ آئندہ ماہ برطانیہ میں دولت مشترکہ سربراہان مملکت کی میٹنگ ہونے والی ہے جس میں دولت مشترکہ ملکوں کے سربراہوں کے علاوہ نوجوان، تجارت سے وابستہ شخصیات اور سول سوسائٹی کے افراد جمع ہوں گے ۔ا س سے ہمیں ایک زیادہ محفوظ، خوشحال اور پائیدار مستقبل کی تعمیر کے لئے غورو خوض کرنے اور لائحہ عمل تیار کرنے میں مدد ملے گی۔ اسپورٹس کو امن اور ترقی کا معاون قرار دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اگلے ماہ آسٹریلیا میں دولت مشترکہ کھیل ہونے والے ہیں۔ جہاں دولت مشترکہ ممالک کے کھلاڑی ایک دوستانہ ماحول میں ایک دوسرے پر سبقت لے جانے کی کوشش کریں گے ۔ دولت مشترکہ کو مزید مستحکم بنانے کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے ملکہ برطانیہ نے کہا کہ اس سے نہ صرف آج لوگوں کی زندگیوں پر بلکہ مستقبل کی نسلوں پر بھی مثبت اثرات پڑیں گے ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں