کھٹوعہ عصمت دری اور قتل کیس کو ریاست سے باہر منتقل کرنے کی درخواست پر سپریم کو رٹ نے ریاستی حکومت سے جواب طلب کیا

سرینگر//﴿آفتاب ویب ڈیسک﴾سپریم کورٹ نے جموں کشمیر کے کھٹوعہ عصمت دری اور قتل معاملہ کو چنڈی گڑھ منتقل کرنے سے متعلق عرضی پر ریاستی حکومت سے جواب طلب کیا ہے ۔چیف جسٹس دیپک مشراکی صدارت والی بنچ نے متوفیہ کی والد اور معاملہ کی پیروی کررہی وکیل دیپکا رجاوت کی عرضیوں پر آج تیزی سے سماعت کرتے ہوئے ریاستی حکومت کو نوٹس جاری کرکے جواب دینے کو کہاہے ۔عدالت نے ریاستی حکومت کو متوفیہ کے گھر والوں اور وکیل کو سکیورٹی فراہم کرانے کا بھی حکم دیاہے ۔عدالت نے حالانکہ اس بارے میں مداخلت کرنے سے انکار کردیا کہ عصمت دری اور قتل کی جانچ کون سی ایجنسی کریگی۔معاملہ کی آئندہ سماعت 27اپریل کو ہوگی۔متوفیہ کے والدنے معاملہ کی سماعت کٹھوعہ کے بجائے چنڈی گڑھ میں کرائے جانے اور خاندان کو تحفظ فراہم کرنے سے متعلق عرضی آج سپریم کورٹ میں دائر کی ۔ایک دیگرعرضی متوفی بچی کے خاندان کی پیروی کررہی وکیل دیپکا رجاوت نے دائر کی ہے اور اپنی سکیورٹی کی درخواست کی ہے ۔واضح رہے عرضی گزارکی طرف سے سینئر وکیل اندراجے سنگھ نے صبح معاملہ کا خصوصی ذکر کیاتھا۔انھوں نے اس معاملہ پر فورا سماعت کرنے کی درخواست کی تھی ،جس پر عدالت نے کہاتھا کہ وہ عرضی پر سماعت آج ہی سہ پہر دوبجے کریگی۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں