ٹرانسپورٹ کی عدم دستیابی کیخلاف احتجاج کرنیوالے طلبہ  فوج نے مظاہرین کو مارمار کر لہولہان کردیا

سرینگر/ اے پی آئی /سوگام لولآب کے علاقے میں اس وقت تشدد بھڑک اٹھا جب ہائیر اسکینڈری اور اسکولوں میں زیر تعلیم طلبا نے ٹرانسپورٹ کی عدم دستیابی کے خلاف احتجاجی مظاہرے کئے ،فورسز اہلکاروں نے انہیں شاہراہ کو بند رکھنے پر مار پیٹ کی جسے 2طالب علم زخمی ہوئے ۔ بڑی بیری سوگام لولآب کے علاقے میں اس وقت تشدد بھڑک اٹھا جب ہائیر اسکینڈری اور ہائیر اسکول میں زیر تعلیم طلاب کی کثیر تعداد نے ٹرانسپورٹ کی عدم دستیابی کے خلاف احتجاجی مظاہرے کئے ۔اس دوران 28راشٹریہ رائفلز کی ایک ایمبولنس جس میں فورسز اہلکار سوار تھے وہاں سے گذری ،احتجاج کرنے والے طلبا نے فورسز کی ایمبولنس گاڑی کو روک دیا ،ایمبولنس میں سوار 28راشٹریہ رائفلز کے اہلکار مشتعل ہوئے اور انہوںنے احتجاج کرنے والے طلبا کو زدکوب کرنا شروع کر دیا ۔ فورسز اہلکاروں کی اس کارروائی پر طلبا بھی مشتعل ہوئے اور انہوںنے سنگباری شروع کر دی ۔ فریقین کے درمیان تصادم آرائی کا سلسلہ کافی دیر تک جاری رہا ۔ نمائندے کے مطابق فورسز اہلکاروں کے زد کوب سے گیارویں جماعت میں زیر تعلیم سجاد احمد میر زخمی ہوا جبکہ اس کے دوسرے ساتھی کو بھی چوٹیں آئیں ۔ بلاک میڈیکل افسر سوگام نے اس بات کی تصدیق کی کہ زخمی حالت میں ایک طالب علم کو علاج کیلئے اسپتال پہنچا دیا گیا اسے /جاری صفحہ نمبر۱۱پر
مزید علاج کیلئے ضلع اسپتال ہندوارہ منتقل کیا گیا تاہم اس کی حالت خطرے سے باہر ہے ۔ نمائندے کے مطابق فورسز اہلکاروں کی کارروائی پر مقامی لوگ بھی مشتعل ہوئے اور انہوںنے بھی سڑکوں پر آکر احتجاجی مظاہرے کئے اور انتظامیہ سے مطالبہ کیا کہ طلبا کو زدکوب کرنے والے فورسز اہلکاروں کے خلاف کارروائی عمل میں لائی جائے ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں