امریکہ نے شام پر دوبارہ حملہ کیا تو خطرناک نتائج برآمد ہونگے

سرینگر//﴿ آفتاب ویب ڈیسک ﴾ روسی صدر ولادی میر پیوٹن نے خبردار کیا ہے کہ اگر مغرب کی جانب سے شام پر دوبارہ حملہ کیا گیا تو اس کے خطرناک نتائج برآمد ہوں گے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق ولادی میر پیوٹن نے زور دیا کہ اگر شام پر حملہ کر کے دوبارہ اقوام متحدہ کے چارٹر کی خلاف ورزی کی گئی تو یہ عالمی تعلقات کے لئے نامناسب اور خطرناک ہوگا۔دوسری جانب اقوام متحدہ میں امریکی مندوب نکی ہیلی نے اعلان کیا ہے کہ 'فیس دی نیشن' کے نام سے ایک پروگرام شروع کیا جائے گا جس کے تحت ان کمپنیوں پر پابندیاں عائد کی جائیں گی جو شامی صدر بشار الاسد حکومت کے لئے کیمیکل ہتھیاروں کی فراہمی کا سبب بن رہی ہیں۔قابل ذکر ہے کہ 14 اپریل کو امریکہ، برطانیہ اور فرانس کی جانب سے شام پر 105 میزائل فائر کیے گئے جب کہ اس حوالے سے پینٹاگون نے اپنے بیان میں کہا کہ میزائل حملوں سے شامی فوج کی کیمیکل ہتھیاروں کی تنصیبات کو نشانہ بنایا گیا۔یاد رہے کہ مغربی ممالک نے بشارالاسد حکومت پر باغیوں کے زیرقبضہ علاقے دوما پر 7 اپریل کو کیمیائی حملوں کا الزام عائد کیا جب کہ روس اور شامی حکومت نے ان الزامات کی سختی سے تردید کی تھی۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں