تنخواہیں مانگنے والے اساتذہ پر لاٹھیاں برسائی گئیں مظاہرین پررنگدار پانی کی بوچھاڑ، درجنوں گرفتار

سرینگر/ کے این این /پولیس نے’ ایس ایس اے اساتذہ کے سیول سیکریٹریٹ گھیرائو کی کوشش کو ناکام ‘ بناتے ہوئے احتجاجی مظاہرین کو تتر بتر کرنے کیلئے لاٹھی چارج کے ساتھ ساتھ رنگین پانی کی بو چھاڑ کی جبکہ درجنوں/جاری صفحہ نمبر ۱۱پر
 احتجاجی اساتذہ کو حراست میں بھی لیا گیا۔پولیس کارروائی کے دوران 2ویڈیو جرنلسٹوں سمیت نصف درجن سے زیادہ افراد کو چوٹیں آئیں ۔اس دوران ریذ یڈنسی روڑ پر کچھ دیر کیلئے افراتفری بھی پھیل گئی جبکہ اس مصروف ترین روڑ پر ٹریفک کی آوا جاہی بھی متاثر ہوئی ۔ ریذیڈنسی روڑ پر اُس وقت افراتفری اور اتھل پتھل مچ گئی جب پولیس نے پیر کے روز ایس ایس اے اساتذہ کے سیلو سیکریٹریٹ گھیرائو کی ایک کوشش کا ناکام بنا دیا ۔ سینکڑوں ایس ایس اے اساتذہ طے شدہ احتجاجی پروگرام کے تحت پرتاپ پارک میں جمع ہوئے ،جہاں انہوں نے اپنے مطالبات کو لیکر احتجاجی دھر نا دیا ۔سٹی رپورٹر کے مطابق ایس ایس اے ایسوسی ایشن کے بینر تلے یہاں احتجاجی مظاہرے کئے ۔پرتاپ پارک میں اپنا احتجاج جاری کرنے کے بعد پویس کالونی تک مارچ کیا ،جہاں سے انہوں نے سیول سیکریٹریٹ کی جانب پیش قدمی کی ۔تاہم پریس کالونی میں پہلے سے تعینات پولیس کی بھاری جمعیت نے احتجاجی اساتذہ کی سیول سیکریٹریٹ کی جانب پیش قدمی کی اجازت نہیں دی ۔اس دوران پولیس اور مظاہرین کے درمیان مزاحمت ہوئی ۔پولیس نے احتجاجی مظاہرین کو تتربتر کرنے کیلئے لاٹھی چارج کیا اور رنگین پانی کی بوچھاڑ کی ۔پولیس کارروائی کے نتیجے میں ریذیڈنسی روڑ پر افراتفری پھیل گئی ۔پولیس نے مظاہرین پر لاٹھی چارج کے علاوہ رنگین پانی کی بوچھاڑ بھی کی ۔پولیس کارروائی کے نتیجے میں 2ویڈیو جرنلسٹوں سمیت نصف درجن سے زیادہ افراد کو چوٹیں آئیں ۔دونوں کو اسپتال میں مرہم پٹی کی گئی ۔زخمی دیگر افراد میں ایس ایس اے اساتذہ شامل ہیں ،جنہیں اسپتال منتقل کیا گیا ،جن میں سے کئی ایک کے سر میں چوٹ آئی ہے ۔پولیس نے درجنوں احتجاجی اساتذہ کو حراست میں بھی لیا ۔ایس ایس اے اساتذہ تنخواہوں میں تفاوت دور کرنے کے حق میں احتجاجی مظاہرہ کررہے تھے ۔احتجاجی اساتذہ تنخواہوں کو ’ڈی ۔لنک‘ کرنے کا مطالبہ کررہے تھے ۔ایس ایس اے اساتذہ کی تنخواہیں مرکزی اسکیم کے تحت واگزار کی جاتی ہیں ۔یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ ایس ایس اے اسکیم کے تحت تعینات کئے گئے رہبر تعیم اساتذہ کی تین ماہ سے تنخواہ رُکی پڑی ہوئی ہے ۔دریں اثنائ کانگریس نے ایس ایس اے اساتذہ پر پولیس یلغار کی مذمت کی ۔پارٹی کے ترجمان فاروق اندرابی نے اپنے مطالبات پر احتجاج کررہے اساتذہ پر لاٹھیاں برسانا قابل مذمت اور شرمناک عمل ہے ۔انہوں نے کہا کہ ایس ایس اے اساتذہ کے مطالبات جائز ہیں اور حکومت کو چاہئے کہ وہ بغیر کسی تاخیر پورا کیا جانا چاہئے تاہم حکومت کا رویہ حد درجہ افسوسناک ہے ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں