سانبہ سیکٹر میں شدید گولہ باری ، فورسز اہلکار ہلاک ہیرانگر سیکٹر میں پانچ جنگجو اس طرف آنے میں کامیاب ، تلاشی کارروائی جاری

سرینگر/ یو پی آئی /بارڈ رسیکورٹی فورسز کے ڈائریکٹر جنرل نے کہاکہ درمیانی رات کو سیکورٹی فورسز نے سانبہ سیکٹر میں دراندازی کی کوشش کو ناکام بنایا جس دوران ایک بی ایس ایف اہلکار اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھا۔ ڈائریکٹر جنرل بی ایس ایف کے مطابق اتوار کے روز ہیر نگر سیکٹر میں پانچ عسکریت پسند اس طرف آنے میں کامیاب ہوئے ہیں جنہیں مار گرانے کیلئے سانبہ او رکٹھوعہ سیکٹروں میں بڑے پیمانے پر جنگجو مخالف آپریشن شروع کیا گیا ہے۔ انہوںنے کہاکہ وزیر اعظم ہند کے دورے ریاست کو مد نظر رکھتے ہوئے جموں صوبہ میں ہائی الرٹ جاری کردیا گیا ہے۔ ایک پُر ہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے بارڈ رسیکورٹی فورسز کے ڈائریکٹر جنرل ’’کے کے شرما ‘‘ نے کہاکہ پاکستان جنگجوئوں کو اس طرف دھکیلنے کیلئے کوششوں میں لگا ہوا ہے۔ انہوںنے کہاکہ کل رات سانبہ سیکٹر میں جنگجوئوں کے ایک گروپ نے اس طرف آنے کی کوشش کی تاہم متحریک اہلکاروں نے عسکریت پسندوں کے ارادوں کو ناکام بنا کر انہیں للکارا جس دوران گولیوں کا تبادلہ ہوا جس کے نتیجے میں ایک بی ایس ایف اہلکار ہلاک ہوا۔ بی ایس ایف چیف کے مطابق اتوار کے روز پانچ عسکریت پسند اس طرف آنے میں کامیاب ہوئے ہیں اور وہ ہیرا نگر کے جنگلی علاقوں میں چھپے بیٹھے ہیں۔ انہوںنے کہاکہ عسکریت پسندوں کو ڈھونڈ نکالنے کیلئے ہیلی کاپٹر وں کی بھی/جاری صفحہ نمبر ۱۱پر
 خدمات حاصل کی گئی ہیں۔بی ایس ایف چیف کے مطابق جدید آلات سے پتہ چلا ہے کہ پانچ کے قریب جنگجو اتوار کے روز ہیرا نگر سیکٹر میں اس طرف آنے میں کامیاب ہوئے ہیں۔ انہوںنے کہاکہ پاکستان نے بھارت کے خلاف درپردہ جنگ شروع کی ہے اور زیادہ سے زیادہ جنگجوئوں کو اس طرف دھکیلنے کی کوششوں میں لگا ہوا ہے۔ بارڈ رسیکورٹی فورسز ڈائریکٹر جنرل کے مطابق سرحدوں پر تعینات اہلکاروں کو کسی بھی جارحیت کا مقابلہ کرنے کیلئے تیاری کی حالت میں رکھا گیا ہے۔ انہوںنے کہا کہ جنگجوئوں کو اس طرف دھکیلنے کیلئے پاکستانی رینجرس بی ایس ایف چوکیوں کو نشانہ بنا رہے ہیں تاہم پاکستان کے عزائم کو کسی بھی صورت میں کامیاب نہیں ہونے دیا جائیگا۔ انہوںنے کہاکہ بی ایس ایف اہلکار کی شہادت کا پاکستان سے ضرور بدلہ لیا جائے گا۔ پاکستانی زیر انتظام کشمیر میں عسکریت پسندوں کی موجودگی کے بارے میں پوچھے گئے سوال کے جواب میں بی ایس ایف ڈائریکٹر جنرل نے کہاکہ اُس پار کشمیر میں لاچنگ پیڈوں کو پھر سے متحرک کیا گیا ہے اور وہاں پر عسکریت پسندوں کو اس طرف دھکیلنے کیلئے تیاری کی حالت میں رکھا گیا ہے۔ سرحدوں پر سمارٹ فینسنگ نصب کرنے کے بارے میں پوچھے گئے سوال کے جواب میں کے کے شرما نے کہاکہ اس پر کام ہو رہا ہے۔ انہوںنے کہاکہ آنے والے مہینے میں فینسنگ کا کام مکمل ہوگااور اگلے ماہ ہی مرکزی وزیر داخلہ اس کا افتتاح کرئینگے۔ انہوںنے کہاکہ دراندازی کا توڑ کرنے کیلئے جدید ٹیکنالوجی کا سہارا لیا جارہا ہے۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں