مودی کا دورہ جموں وکشمیرکے پیش نظر سیکورٹی کے غیرمعمولی انتظامات

سرینگر//﴿آفتاب ویب ڈیسک ﴾ وزیر اعظم نریندر مودی کے دورہ جموں وکشمیر کے پیش نظر ریاست میں سیکورٹی کے غیرمعمولی انتظامات کئے گئے ہیں۔ مودی 19 مئی کو دو روزہ دورے پر جموں وکشمیر آئیں گے اور مختلف ترقیاتی پروجیکٹوں کا افتتاح کرنے کے علاوہ شیر کشمیر یونیورسٹی آف ایگریکلچر سائنسز اینڈ ٹیکنالوجی ﴿سکاسٹ﴾ جموں کے چھٹے جلسہ تقسیم اسناد سے بحیثیت مہمان خصوصی خطاب کریں گے۔ وزیر اعظم مودی اپنے دورے کے دوران ضلع ریاسی میں واقع ’ماتا ویشنو دیوی مندر‘ کو جانے والے 7 کلو میٹر طویل متبادل راستے کو یاتریوں کے لئے کھول دیں گے۔ وہ ایک ہزار میگاواٹ کی صلاحیت والے پکل ڈل پن بجلی پروجیکٹ اور جموں رنگ روڑ پروجیکٹ کا سنگ بنیاد رکھیں گے۔ وہ شیر کشمیر یونیورسٹی آف ایگریکلچر سائنسز اینڈ ٹیکنالوجی ﴿سکاسٹ﴾ جموں کے چھٹے جلسہ تقسیم اسناد سے بحیثیت مہمان خصوصی خطاب کریں گے۔مودی وادی کشمیر میں شمالی ضلع بانڈی پورہ میں بننے والے 330 میگاواٹ کی صلاحیت والے کشن گنگا پن بجلی پروجیکٹ کا رسمی افتتاح کریں گے اور سری نگر رنگ روڑ پروجیکٹ کا سنگ بنیاد رکھیں گے۔ وزیر اعظم امکانی طور پر زوجیلا ٹنل پروجیکٹ کا بھی سنگ بنیاد رکھیں گے اور لیہہ میں منعقد ہونے والی ایک تقریب میں شرکت کریں گے۔ پولیس ذرائع نے بتایا کہ وزیر اعظم مسٹر مودی کے دورے کے پیش نظر صوبہ جموں میں سیکورٹی سخت کردی گئی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ مشتبہ افراد کی نقل و حرکت پر نگاہ رکھنے کے لئے مختلف مقامات پر سی سی ٹی وی کیمرے نصب کئے گئے ہیں جبکہ اسپیشل پروٹکشن گروپ ﴿ایس پی جی﴾ کی ایک ٹیم اگلے ایک دو روز میں یہاں پہنچے گی۔ انہوں نے بتایا کہ دراندازی کی کوششوں کو ناکام بنانے کے لئے پاکستان کے ساتھ لگنے والی لائن آف کنٹرول اور بین الاقوامی سرحد پر بھی چوکسی بڑھا دی گئی ہے۔ بی ایس ایف کے ڈائریکٹر جنرل کے کے شرما نے کہا کہ وزیراعظم مودی کے دورہ جموں کے پیش نظر سیکورٹی فورسز کو الرٹ کردیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا ’وزیر اعظم کے دورے سے قبل دراندازی کی کوششیں کی جارہی ہیں۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں