کشمیریونیورسٹی کے رومی گیٹ پر تعینات سپاہی سے رایفل چھین لی گئی چھتہ بل میں سی آر پی گاڑی پر گرینیڈ حملہ، تین راہ گیر زخمی

سرینگر/کے این ایس /یک طرفہ جنگ بندی کی بازگشت کے بیچ نامعلوم افراد نے کشمیر یونیورسٹی کی سیکورٹی پر مامور پولیس اہلکار سے بندوق چھین کر سیکورٹی ایجنسیوں کو ایک بار پھر ورطہ حیرت میں ڈال دیا۔ادھر وادی میں جنگجوئوں کی طرف سے ہتھیار چھیننے کی کوششوں میں گزشتہ دو ماہ کے دوران اضافہ ہوا ہے جس نے سیکورٹی ایجنسیوں کو حکمت عملی میں تبدیلی لانے پر مجبور کیا ہے۔ کشمیر یونیورسٹی حضرت بل میں بدھوار کو اُس وقت افرا تفری کا ماحول بپا ہوا جب نامعلوم افراد نے یونیورسٹی کے عقبی دروزے رومی گیٹ پر تعینات ایک پولیس اہلکار سے سروس رائفل چھن کر فرار ہوئے۔ اطلاعات کے /جاری صفحہ نمبر ۱۱پر
مطابق بدھوار کی دوپہر نامعلوم افراد نے کشمیر یونیورسٹی کے رومی گیٹ پر تعینات پولیس اہلکار سے رائفل چھینی جس کے بعد وہ جائے موقعہ سے فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔ اس دوران پولیس کے اعلیٰ افسران نے جائے موقعہ پر پہنچ کر حالات کا جائزہ لے کر رائفل چھیننے والے افراد کی تلاش بڑے پیمانے پر شروع کردی۔ اس دوران یونیورسٹی میں واقعہ کی خبر پھیلتے ہی افرا تفری کا ماحول بپا ہوا اور طلاب اپنی سلامتی کی فکر میں محفوظ مقامات کی جانب بھاگنے لگے۔ واقعہ سے متعلق پولیس زون کشمیر نے سماجی رابطہ گاہ ٹویٹر پر تفصیلات فراہم کرتے ہوئے کہا کہ ’’کشمیر یونیورسٹی کے رومی گیٹ پر تعینات پولیس اہلکار سے رائفل چھیننے کا واقع پیش آیا ہے۔ علاقہ میں تلاشی کارروائیاں جاری ہے اور واقعہ میں ملوث افراد کی نشاندہی کے لیے اقدامات کئے جارہے ہیں‘‘۔ واضح رہے 2016کے بعد سے لے کر اب تک وادی میں سرکاری فورسز سے ہتھیار چھیننے کے واقعات میں روز بروز اضافہ ہورہا ہے جس کے نتیجے میں وادی میں تعینات سیکورٹی ایجنسیاں بھی کافی تشویش میں مبتلا ہوگئی ہے۔ادھرجنگجوئوں نے شہر سرینگر میں ایک بار پھر اپنی موجودگی کا احساس دلاتے ہوئے چھتہ بل علاقہ میں سی آر پی ایف کی گاڑی کو نشانہ بنانے کی غرض سے ایک ہتھ گولہ داغا جونشانہ چوک کر سڑک پر زور دار دھماکے کے ساتھ پھٹ گیا جس کے نتیجے میں 3 راہ گیر زخمی ہوگئے، جبکہ دھماکے کی آواز سنتے ہی وہاں پر بھاگم بھاگ کا عالم بپائ ہوا جس دوران لوگ محفوظ مقامات کی طرف بھاگنے لگے۔ شہر سرینگر میں جنگجوئوں نے ایک بار اپنی موجودگی کا احساس دلاتے ہوئے چھتہ بل علاقہ میں سی آر پی ایف کی گاڑی کو نشانہ بناتے اس پر ایک ہتھ گولہ داغا جو نشانہ چوک کر سڑک پر زور دار دھماکے کے ساتھ پھٹ گیا جس کے نتیجے میں 3راہ گیر زخمی ہوگئے جنہیں علاج و معالجہ کی خاطر ہسپتال منتقل کیا گیا ۔ واقعہ کے ساتھ ہی علاقہ بھر میں سراسیمگی پھیل گئی جبکہ لوگ محفوظ مقامات کی جانب دوڑ نے لگے۔ اطلاعات کے مطابق اس موقعہ پر سیکورٹی ایجنسیوں کے اعلیٰ افسران جائے موقعہ پر پہنچ گئے اور حالات کا جائزہ لیا۔ فورسز اہلکاروں نے اس موقعہ پر حملہ آور جنگجوئوں کو ڈھونڈ نکالنے کی خاطر چھتہ بل سمیت بمنہ علاقہ میں تلاشی کارروائی شروع بھی کی۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں