عالمی فٹ بال میں مسلم کھلاڑیوں کی حکمرانی

لندن/ فٹ بال میں متعدد مسلمان فٹ بالرزکی حکم رانی قائم ہے ۔ان میں محمدصالح ،پال پوگبا،سیدومانے ،مسعوداوزل ،کریم بن زیما، زین الدین زیدان ، فرینک ریبری ، ایڈن زیکو، یحییٰ،کولوطورے ، ریاض مہریز،نکولس انیلکا سمیت دیگرفٹ بالرزاپنے کارناموں سے دنیا بھر میں اپنے مداحوں کے دل و دماغ پر بھی حکومت کررہے ہیں۔قابل ذکر بات یہ ہے کہ ان مسلم کھلاڑیوں نے بین الاقومی مقابلوں کے دوران بھی اسلامی روایات کو قائم رکھا ہوا ہے اورکھیل کے میدان میں اپنی جیت کا جشن،سجدے میں گرکر اور آسمان کی طرف ہاتھ اٹھا کراللہ کا شکر ادا کرتے ہیں۔ ان میں سے چند کھلاڑیوں کاتذکرہ درج ذیل ہے ۔
نعیم ﴿محمدعلی عمار ﴾
پہلے مسلمان فٹ بالراسپین سے تعلق رکھنے والے نعیم کا اصل نام محمد علی عمار ہے ۔ وہ پانچ برس تک انگلش پریمیئر لیگ کے کلب ٹوٹہنم ہاٹ اسپر سے وابستہ رہے ۔ ان کی وجہ شہرت 1993میں اے ایف کپ کے کوارٹر فائنل میں مانچسٹر سٹی کے خلاف ہیٹ ٹرک تھی، جس میں عمدہ پرفارمنس کا مظاہرہ کرتے ہوئے انہوں نے ٹوٹنہم کو مانچسٹر سٹی کے خلاف 2۔4 سے کامیابی دلائی تھی۔ نعیم نے ٹوٹہنم ہاٹ اسپرکو ایف اے کپ جتوانے میں اہم کردار ادا کیاجبکہ بارسلونا کو کوپا ڈیل رے چمپئن بنوایا۔
محمد صالح
محمد صالح کا تعلق مصر سے ہے ، ان کا پورا نام محمد صالح غالی ہے ۔صالح نے جون 2017 میں انگلش پریمیئر کلب لیور پول جوائن کی اور 10برس بعداسے چمپئنز لیگ کے سیمی فائنل میں پہنچانے میں کلیدی کردار ادا کیاتھا۔ اس سے قبل محمد صالح نے لیور پول کو پورٹو کلب کے خلاف0۔5سے کامیابی دلائی۔محمد صالح نے 2017۔18 میں انگلش پریمیئر لیگ کے بہترین فٹ بالر کا ایوارڈحاصل کیا۔کھیل میں ان کی بہترین کارکردگی کی وجہ سے انہیں ''گول مشین ''کا خطاب دیا گیا ہے ۔ ان کے شاندار کھیل کی بدولت مصرنے 2018 میں ہونے والے فیفا ورلڈ کپ میں رسائی حاصل کی۔
پاول پوگبا
مانچسٹر یونائیٹڈ کے سینٹرمڈفیلڈر پاول پوگباکا شمار دنیا کے مہنگے ترین فٹ بالرزمیں ہوتا ہے ۔25سالہ فرانسیسی نژاد فٹ بالر کا تعلق گنی سے ہے ۔ان کی والدہ مسلمان تھیں، بعد ازاں پال نے بھی اسلام قبول کرلیا۔ پاول نے اطالوی کلب، یوونٹس فٹ بال کلب کی نمائندگی کرتے ہوئے ٹیم کو چارمرتبہ متواتراطالوی سیریز اے ، دو بار کوپا اٹالین کپ اوردوبار سپر کوپا اٹالین ٹائٹلزمیں کامیابی دلوائی۔ 2013 میں انہوں نے گولڈن بوائے اور2014میں براوو ایوارڈحاصل کیے ۔انہیں اپنے کلب کو 2015یوئیفا چمپئنز لیگ کے فائنل میں رسائی دلانے پر 2015 میں'' یوئیفا ٹیم آف دی آئیر'' میں نامزد کیا گیا تھا۔ انہوں نے پہلی بار 2014فیفاورلڈ کپ میں کھیلتے ہوئے نائیجریا کے خلاف پہلا گول کیاٹورنامنٹ میں عمدہ پرفارمنس پر ان کو بیسٹ ینگ پلیئر ایوارڈ سے نوازا گیا ۔پال نے 2016 یوئیفا یورو کپ میں فرانس کو فائنل میں پہنچانے میں اہم کردار ادا کیا تھا۔
سیدومانے
سیدو مانے ، انگلش کلب لیور پول کی جانب سے کھیلنے والے دوسرے مسلمان فٹ بالر ہیں ۔سیدومانے نے یوئیفاچمپئنز لیگ کے کوارٹر فائنل میں مانچسٹر سٹی کو آؤٹ کلاس کرنے میں اہم کردار اداکیا اور لیور پول کو 10 سال بعد یوئیفاچمپئنز لیگ کے ٹاپ فور میں پہنچایا۔ 2015 میں ا نہوں نے ساؤتھمپٹن کوایشٹن ویلا کے خلاف 1۔6 سے کامیابی دلائی اورصرف دو منٹ 56سیکنڈمیں تیز ترین ہیٹ ٹرک کرنے کا ریکارڈ قائم کیا۔سیدو مانے 2016 میں لیورپول کلب سے وابستہ ہوئے اور تاریخ کے مہنگے ترین افریقی پلیئر بنے ۔2012 اولمپکس، 2015 اور 2017 افریقن کپ آف نیشنز میں سنیگال ٹیم کی نمائندگی کرچکے ہیں۔
زین الدین زیدان
دنیا کے نام ور فٹ بالر،زین الدین زیدان کا شمار فرانس کے لیجنڈکھلاڑیوں میں ہوتا ہے ۔ انہیں 2001 میں تاریخ کے مہنگے ترین کھلاڑی ہونے کا اعزاز حاصل تھا۔ انہیں 34سال کی عمر میں فیفا ورلڈ کپ گولڈن بال جیتنے کا اعزاز ملا۔زیدان 1998میں ورلڈ کپ اور 2000میں یورو کپ کے بہترین کھلاڑی قرار پائے ۔ الجرائزی نژاد فٹ بالر،کھیل میں نمایاں کارکردگی دکھانے کے بعد 2014 سے ہسپانوی کلب ریال میڈرڈ میں منیجرکے فرائض انجام دے رہے ہیں۔وہ اپنے کلب کو لالیگا ،سپر کوپا ڈی اسپین، دو باریوئیفا چمپئنز لیگ،دو باریوئیفا سپر کپ اوردو بار فیفا کلب ورلڈ کپ جیتنے کا اعزاز دلواچکے ہیں۔ اس کے علاوہ زین الدین زیدان2017 میں گلوب اسکورر ایوارڈ اور ورلڈ اسکورر میگزین ورلڈ منیجر آف دی ائیر کا ایوارڈ بھی جیت چکے ہیں۔
مسعود اوزل
انگلش پریمیئر لیگ میں تہلکہ مچانے والے ترک نژادمسلمان فٹ بالرکا تعلق جرمنی سے ہے ۔ وہ قومی ٹیم کے ساتھ ساتھ انگلش فٹ بال کلب، آرسنل کی نمائندگی کرتے ہیں۔ اس سے قبل وہ ہسپانوی کلب ریال میڈرڈ،ورڈیر بریمین اور شالکے 04کی جانب سے بھی کھیل چکے ہیں۔جرمن مڈفیلڈر 2014 میں فیفاورلڈ کپ جیتنے والی جرمنی کے ٹیم اسکواڈ میں شامل تھے انہوں نے ٹیم کو عالمی چمپئن بنوانے میں اہم کردار ادا کیا۔ مسعود نے 2010 میں فیفا ورلڈ کپ اور2016 میں انگلش پریمیئر لیگ اور ٹاپ اسسٹ پروائیڈرکے ایوارڈز اپنے نام کئے ۔وہ آرسنل کو تین بار ایف اے کپ ،ایف کمیوینٹی شیلڈٹائٹلز جتواچکے ہیں،اس کے علاوہ انہوں نے ریال میڈرڈ کو2011۔12 لالیگا ،2010۔11کوپا ڈیل رے ، 2012سپر کوپا ڈی اسپونئیل چمپئن بنوانے میں اہم کردار ادا کیا۔
کریم بن زیما
الجزائرکے مسلمان گھرانے سے تعلق رکھنے والے فرانسیسی کھلاڑی، کریم بن زیماکا پورا نام کریم مصطفیٰ بن زیما ہے جو ''اسٹرانگ اینڈ پاور فل''اور میچ وننگ کی صلاحیت رکھتے ہیں۔کریم، 2011، 2012 اور2014 میں فرنچ پلیئر آف دی ائیر کا ایوارڈ حاصل کرچکے ہیں۔انہوں نے چار مرتبہ فرنچ لیگ، فرنچ کپ،دو بار سپر کپ،دو بار اسپینش لیگ، دوبار اسپینش کپ، اسپینش سپر کپ، دو بار یوئیفا چمپئنز لیگ،دو بار یوئیفاسپر کپ،دو فیفا کلب ورلڈ کپ اوریورپین ٹرافی جیتنے کا اعزاز حاصل کیاہے ۔
جاری
یواین آئی۔ این اے ۔ م س


NNNN

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں