انجمن شرعی شیعیان کے اہتمام سے وادی بھر میں یوم القدس کی تقریبات منعقد بیت المقدس پر اسرائیلی جابرانہ قبضہ مسلم ممالک کی سردمہری کا نتیجہ: آغا سید ہادی

سرینگر /جمعتہ الوداع کے موقع پر انجمن شرعی شیعیان جموں و کشمیر کے اہتمام سے وادی کے مختلف علاقوں میں عظیم الشان عالمی یوم القدس کے جلوس نکالے گئے۔ اس سلسلہ میں سب سے بڑا جلوس بعد از نماز جمعہ صدر انجمن شرعی شیعیان جموں و کشمیر حجتہ الاسلام والمسلمین آغا سید محمد ہادی الموسوی الصفوی کی سربراہی میں خمینی چوک بمنہ سے برآمد ہوکر مرکزی امام بارگاہ آیت اللہ یوسف ﴿شارع فضل اللہ﴾ میں اختتام پزیر ہوا۔ جلوس میں ہزاروں کی تعداد میں لوگوں نے شرکت کرکے امریکہ اور اسرائیل کے خلاف فلک شگاف نعرے بلند کرکے اہلیان فلسطین و مستضعفین جہان سے اپنی والہانہ ہمدردی اور یکجہتی کا اظہار کیا۔مظاہرین نے ہاتھوں میں پلے کارڑس لئے تھے جن پر فلسطین میں ہورہے اسرائیلی قتل و غارتگری پر عالمی اداروں کی سرد مہری کی پْر زور مذمت کی گئی تھی۔اس موقعہ پر مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے جناب صدر محترم آغا سید محمد ہادی نے یوم القدس کی اہمیت بیان کرتے ہوئے کہا کہ عالم اسلام کی سب سے بڑی ستم ظریفی ہے کہ مسلمانوں کا قبلہ اول مسلم حکمرانوں کی نااہلی و مفاد پرست پالیسیوں کی وجہ سے غاصب صیہونی حکومت کے شکنجہ میں ہے۔انہوں نے کہا کہ امریکہ کی پشت پناہی سے اسرائیل عالمی قوانین اور انسانی حقوق کی دھجیاں اڈاکر اور نہتے لوگوں کا خون بہاکر سر زمین فلسطین پر فلسطینیوں کو بے گھر کرکے یہودیوں کو آباد کررہا ہے۔ آغا صاحب نے کہا بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت قرار دینے کے ڈونالڑٹرمپ کے فیصلہ سے امت مسلمہ کے جذبات مجروح ہوگئے ہیں اور ساتھ ہی ساتھ اس غیر قانونی اور اشتعال انگیز اقدام سے امریکہ کا شیطانی چہرہ مزید عیان ہوگیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اسرائیل کی یہ خام خیالی ہے کہ وہ طاقت کے زور پر بیت المقدس کو اپنے ناپاک منصوبوں کا شکار بناسکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ وعدہ الہی ہے کہ قبلہ اول آزاد ہو کر رہے گااور غاصب اسرائیلی حکومت نابود ہوکر رہے گی۔ مگر اس کے لیے ضروری ہے کہ امت مسلمہ متحد ہو جائے۔ آغا صاحب نے اقوام متحدہ اور انسانی حقوق کے عالمی اداروں کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ انکی خاموشی کی وجہ سے اسرائیل فلسطینی اراضی پر ناجائز اور غاصبانہ قبضہ جمائے رکھے ہے. انہوں نے عالمی ادارے بالخصوص اقوام متحدہ اور او آئی سی سے مطالبہ کیا کہ وہ فلسطین کے مسئلہ پر کاغذی گھوڑے دوڑانے کے بجائے عملی اقدامات اٹھائے۔آغا صاحب نے کہا کہ عالم اسلام امریکی و اسرائیلی سازشوں کے گھیرے میں ہے اور یوم القدس مسلمانوں کواپنے مشترکہ دشمن کی شناخت کرکے ان کی سازشوں کے مقابلے میں بیدار رہنے کی دعوت دیتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ عالم اسلام فلسطین سے لیکر کشمیر تک، شام سے لیکر یمن تک مصیبتوں، سازشیوں اور مشکلات کا شکار ہے۔ ضرورت اس امر کی ہے کہ ہم جزوی اختلافات کو بالائے طاق رکھکر اپنے صفحوں میں اتحاد و اتفاق قائم کرکے اسی میں ہماری کامیابی کا راز مضمر ہے۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں