عید الفطراور شب قدر کے پیش نظر بازاروں میں جاری رش  لوگ خریداری کرنے میں مصروف دیکھے گئے

سری نگر /کے این ایس /عیدالفطر اور شب قدر کے پیش نظر شہر سرینگر اورشمال و جنوب کے بازاروں میں اتوار کے باوجود لوگوں کے بھاری رش اور خرید فروخت کی وجہ سے بازروں میں زبردست گہما گہمی دیکھنے کو ملی جبکہ چند مقامات پر لوگوں کو چھوٹ کے نام پر لوٹنے کا سلسلہ بھی جاری رہا۔ وادی بھر میں عید اور شب قدر کی مقدس تقریب سے قبل ہی سرینگر سمیت شمال و جنوب کے بازاروں میں خریداروں کی گہماگہمی سے بازاروں کی رونق دوبالا ہوگئی ہے۔ نمائندے نے بتایا کہ اتوار کی چھٹی کے سبب شمال و جنوب لوگ اپنے گھروں سے باہر آئے اور عید اور شب قدر کے حوالے سے بازاروں میں جم کر خریداری کی جس سے بازاروں کی رونق بحال ہونے کے ساتھ ساتھ تجارتی اداروں میں جان آگئی۔اس سلسلے میں اتوار کو دن بھر شہر کے ہری سنگھ ہائی اسٹریٹ، گھونی کھن ، مہاراجہ بازار، لل دید مارکیٹ، بتہ مالو، ریذیڈنسی روڑ، مولانا آزاد روڑ، پولو ویو، ڈلگیٹ جیسے علاقوں میں لوگوں کا بھاری رش دیکھنے کو ملا جنہوں نے عید کے پیش نظر مختلف نوعیت کے سازوسامان کی خریداری کی۔ اس موقعہ پر بازاروں میں تل دھرنے کی جگہ بھی نہیں تھی جبکہ ٹریفک پولیس نے عوامی رش کو مدنظر رکھتے ہوئے عوام کی سہولت کے لیے گاڑیوں کے لیے علیحدہ روٹوں کا انتخاب عمل میں لایا تھا تاکہ عوام کو خریداری کے ساتھ ساتھ چلنے پھرنے میں کسی قسم کی دشواری کا سامنا نہ کرنا پڑے۔ شہر کے بیشتر مقامات پر لوگ جن میں مرد و زن شامل ہیں کو شب قدر کے پیش نظر مختلف سامان کو خریدتے ہوئے دیکھا گیا۔ اس دوران عام لوگوں نے شکایت کی کہ عید اور شب قدر کے پیش نظر دوکانداروں نے مختلف اشیائ بشمول سزیوں، مرغ اور گوشت کی قیمتوں میں اضافہ کرنا شروع کردیا ہے۔ عام لوگوں نے کشمیر نیوز سروس کو بتایا کہ بعض مقامات پر تاجر حضرات خریداروں سے مقررہ قیمتوں سے زیادہ وصول کرتے ہیں جبکہ چند مقامات پر غیر معیاری اشیائ بھی بازاروں میں اُتارے گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس حوالے سے بازاروں میں اشیائ کی چیکنگ کے لیے خصوصی دستہ متحرک ہونا چاہیے مگر ایسا کہیں بھی دیکھنے میں نہیں آرہا ہے۔
 انہوں نے انتظامیہ سے مانگ کی کہ وہ شب قدر اور عید الفطر کی مناسبت سے شہر و گام کے بازاروں میں چکینگ اسکوارڑ کو یقینی بنائیں تاکہ مفاد خصوصی رکھنے والے عناصر سادہ لوح خریداروں کی مجبوریوں کا غلط فائدہ نہ اُٹھاسکیں۔ اس دوران جنوبی اور شمالی کشمیر کے کئی قصبوں جن میں کپوارہ، بانڈی پورہ، بارہمولہ، شوپور، پٹن، ترال، پلوامہ، کولگام، اسلام آباد اور شوپیان شامل ہیں‘ میںبھی بازاروں میں عام لوگوں کا بھاری رش دیکھنے کو ملا جس دوران لوگوں کو کھانے کی اشیائ کے علاوہ ملبوسات کی خرید اری کرتے ہوئے دیکھا گیا۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں