جموں وکشمیربھارت اورنہ پاکستان کاحصہ بندوق اُٹھاناکشمیری نوجوانوں کی مجبوری:ظفراکبربٹ

سری نگر:کے این این /سینئرمزاحمتی لیڈرظفراکبربٹ کادوٹوک الفاظ میں کہاہے کہ جموں وکشمیرریاست بھارت اورنہ پاکستان کی ہے بلکہ ریاستی عوام کی ہے،اوریہی اس سرزمین کے اصل وحقیقی مالک ہیں۔وہ کہتے ہیں کہ بھارت اورپاکستان نے ریاست کے ایک ایک حصے کوقبضے یاکنٹرول میں لے رکھاہے۔کے این این کے مطابق ایک انٹرویوکے دوران سالویشن مومنٹ کے چیئرمین ظفراکبربٹ نے واضح کیاکہ جب 1947میں برصغیربرطانوی سامراج کی غلامی سے آزادہوا،اوربھارت وپاکستان کی شکل میں دوآزاداورخودمختارمملکتوں کاقیام عمل میں لایاگیاتواُسوقت ریاست جموں وکشمیر برصغیر کا حصہ نہیں بلکہ ایک خودمختارریاست تھی ۔انہوں نے کہاکہ بھارت اورپاکستان کی طرح جموں وکشمیرکی اپنی علیحدہ پہچان اورشناخت تھی ۔انہوں نے کہاکہ1947میں یہ متحدہ ریاست تقسیم ہوکررہ گئی کیونکہ بھارت نے ایک حصے اورپاکستان نے دوسرے حصے پرقبضہ کیایاکہ کنٹرول میں لیا۔ظفراکبربٹ کاکہناتھاکہ جب جموں وکشمیرکامعاملہ اقوام متحدہ سلامتی کونسل پہنچاتویہاں سلامتی کونسل نے اس مسئلے کاحل نکالنے کیلئے کئی قرادادیں منظورکیں ،جن میں یہ واضح کیاگیاکہ مسئلہ جموں وکشمیرکاایک ہی حل ہے کہ ریاست کے لوگوں کواپنے مستقبل کافیصلہ لینے کیلئے حق خودارادیت کاموقعہ فراہم کیاجائے ،اوراس مقصدکیلئے بھارت اورپاکستان کے زیرکنٹرول ریاست کے سبھی علاقوں میں آزادانہ اورمنصفانہ رائے شماری کرائی جائے ۔سالویشن مومنٹ کے چیئرمین نے مزیدکہاکہ بھارت کے اولین وزیراعظم پنڈت جواہرلعل نہرئونے سری نگرکے تاریخی لالچوک میں جلسہ عام سے خطاب کے دوران سلامتی کونسل کی منظورکردہ قراردادوں کی روشنی میں واضح کردیاکہ کشمیریوں کوحق خودارادیت کے اصول کے تحت رائے شماری کے ذریعے اپنے مستقبل کافیصلہ کرنے کاموقعہ دیاجائیگا۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں