مسلمان اپنی زندگیوں کو اسلامی تعلیمات سے آراستہ کریں شب قدر کے موقعہ پر جامع مسجد میں خطاب

سرینگر/لیلۃ القدر کی مقدس متبرک اور باعظمت تقریب پورے برصغیر کے ساتھ ساتھ جموںوکشمیر میں بھی انتہائی عقیدت و احترام اور مذہبی جوش و جذبے کے ساتھ منائی گئی۔اس سلسلے میں سب سے بڑا اجتماع مسلمانان کشمیر کی مرکزی عبادت گاہ تاریخی جامع مسجد سرینگر میں منعقد ہوا جس میں جہاں وادی کے اطراف و اکناف سے آئے ہوئے ہزاروں فرزندان توحید کے علاوہ پردہ نشین خواتین کی ایک بڑی تعداد نے رات بھر شب بیداری کی اور بارگاہ ایزدی میںسربسجود ہوکر اپنے گناہوں کی مغفرت اور عالم اسلام کی سربلندی اور مسلمانوں کے جملہ مشکلات، مصائب اور مسائل کے حل کیلئے رب العزت کی بارگاہ میں گڑگڑا کر دعائیں مانگیں وہیں اس عظیم اور روح پرور تقریب کو پہلی بار دنیا کے مختلف ممالک بشمول یورپ ، مشرق وسطیٰ اور دیگر ممالک میںرہ رہے لاکھوں کشمیریوں نےFacebook کے ذریعہ براہ راست اس روح پرور تقریب کا حصہ بن کراس کا مشاہدہ کیا اور جناب میرواعظ کے وعظ و تبلیغ، درود و اذکار ، توبہ و استغفار اور مناجات سے فیض حاصل کیا۔اس موقعہ پر جموںوکشمیر کے میرواعظ ڈاکٹر مولوی محمد عمر فاروق صاحب نے روح پرور اور پر کیف بھاری اجتماع میں شب قدر کی فضیلت و عظمت ، نزول قرآن کریم کے انقلابی عمل کا آغاز اور پیغام قرآنی پر تفصیل سے روشنی ڈالتے ہوئے مسلمانوں پر زور دیا کہ اپنی زندگیوں کو اسلامی تعلیمات سے آراستہ کریں۔میرواعظ نے رمضان المبارک کے عظیم پیغام کو اس کے فکری اور معنوی پہلوئوں کو سمجھنے پر زور دیتے ہوئے کہا کہ یہ مہینہ جہاں ہمیں تزکیہ نفس کے حصول اور اللہ تعالیٰ کی ذات کے ساتھ تمسک کو مزید مستحکم اور مضبوط کرنے کی دعوت دیتا ہے وہیں اس مہینے کے فیوض و برکات اور اللہ کی بے پناہ رحمتوں سے ایک مسلمان کو بھرپور استفادہ کرنے کا موقعہ فراہم ہوتا ہے ۔ انہوںنے کہا کہ من حیث القوم آج جن سنگین نوعیت کے مسائل کا ہمیں سامنا ہے اسکی بنیادی وجہ قرآن حکیم سے دوری اور اسلام کے آفاقی پیغام کو نہ سمجھنے یا ان پر عمل نہ کرنا ہے ۔جناب میرواعظ نے کہا کہ قرآنی احکامات اور اسلام کے آفاقی نظام حیات کو سمجھے بغیر اور اس کو اپنی زندگیوں میں عملی طور نافذ کئے بغیر ہم صحیح معنوں میں کامیابی اور سرخروئی سے ہمکنار نہیں ہو سکتے ہیں۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں