پاکستان کو اجازت نہ دی تو ہندوستانی کشتی یونین پر پابند ی عاید ہوگی:  برج بھوشن

ئی دہلی/یو این آئی/ ہندستانی کشتی فیڈریشن ﴿ڈبلیوایف آئی﴾ کے صدر برج بھوشن شرن سنگھ نے منگل کو کہا کہ اگر پاکستان کو دارالحکومت میں 17 سے 22 جولائی تک ہونے والی ایشیائی جونیئر کشتی مقابلے میں حصہ لینے کی اجازت نہیں دی گئی تو یونائیٹڈ ورلڈ کشتی ڈبلیوایف آئي پر پابندی لگا سکتا ہے ۔ہندستان 17 سے 22 جولائی تک دہلی کے ڈی جادھو کشتی اسٹیڈیم میں ایشیائی جونیئر فری اسٹائل، گریکو رومن اور خواتین کشتی مقابلہ منظم کر رہا ہے جس میں میزبان ہندستان سمیت 17 ممالک کے پہلوان حصہ لیں گے ۔برج بھوشن نے اس تناظر میں یہاں منعقد پریس کانفرنس میں پاکستان اور افغانستان کی شرکت کے بارے میں پوچھے جانے پر کہا کہ ہمیں ابھی وزارت داخلہ سے منظوری نہیں ملی ہے ۔ہم نے اس سلسلے میں فروری میں ہی تجویز بھیج دی تھی جسے وزارت کھیل سمیت باقی سب جگہ سے منظوری مل گئی ہے لیکن وزارت داخلہ نے ابھی تک منظوری نہیں دی ہے ۔انہوں نے کہاکہ یہ دو ممالک کا ٹورنامنٹ نہیں ہے بلکہ کثیر القومی ٹورنامنٹ ہے ۔پاکستان کو اس میں حصہ لینے کا حق ہے اور ہم اس کو روک نہیں سکتے ۔اس نے آخری بار اجازت نہیں ملنے پر کشتی کی عالمی تنظیم یونائیٹڈ ورلڈ کشتی سے شکایت کی تھی اور اس بار وہ پہلے سے ہی عالمی ادارے کے سامنے اپنی شکایت درج کرا چکا ہے ۔اگر پاکستان کو حصہ لینے سے روکا جاتا ہے تو عالمی ادارہ ہمیں اولمپکس سے باہر کرنے کے علاوہ کشتی سے بھی محروم کر سکتا ہے ۔کشتی یونین کے صدر نے کہاکہ پاکستان کی لڑکیوں کو چھوڑ کر پوری ٹیم آ رہی ہے ۔پاکستان کی کشتی ٹیم اچھی ہے اور اس نے دولت مشترکہ کھیلوں میں طلائی تمغہ بھی جیتا ہے ۔پاکستانی ٹیم کو ویزا دلانے کی ذمہ داری ہم پر ہے ۔میں نے مرکزی وزیر داخلہ سے وقت مانگا ہے ۔ہم کل ان سے مل کر اصل صورت حال سے آگاہ کرائیں گے اور ان سے درخواست کریں گے کہ پاکستانی ٹیم کی منظوری دے دی جائے نہیں تو ہندستانی کشتی پر پابندی کی تلوار لٹکی رہے گی۔

 

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں