جموں وکشمیر میں ٹیلنٹ کی کوئی کمی نہیں:عرفان پٹھان،  رنجی ٹرافی میں ریاستی ٹیم کی کپتانی نہیں کروں گا

جموں/ بھارتی کرکٹ ٹیم کے آل راؤنڈر عرفان پٹھان جنہیں جموں وکشمیر کرکٹ ایسوسی ایشن نے آنے والے رنجی ٹرافی سیزن کے لئے ریاست کے کھلاڑیوں کا کوچ مقرر کیا ہے ، نے کہا کہ جموں وکشمیر میں ٹیلنٹ کی کوئی کمی نہیں ہے ۔ انہوں نے کہا کہ وہ آنے والے رانجی ٹرافی سیزن کے دوران ریاستی ٹیم کی کپتانی نہیں کریں گے بلکہ وہ صرف کھیلیں گے اور نوجوان کرکٹروں کے سرپرست کے طور پر کام کریں گے ۔پٹھان گذشتہ قریب ایک ہفتے سے جموں میں خیمہ زن ہیں۔ اس سے قبل انہوں نے سری نگر میں رنجی ٹرافی اور دوسرے گھریلو کرکٹ ٹورنامنٹوں کے لئے ممکنہ کھلاڑیوں کا انتخاب عمل میں لایا۔ عرفان پٹھان نے یو این آئی کے ساتھ اپنے ایک انٹرویو میں بتایا 'میں رنجی ٹرافی کے اگلے سیزن میں جموں وکشمیر ٹیم کی کپتانی نہیں کروں گا۔ میرا ماننا ہے کہ ٹیم کا کپتان کوئی مقامی کھلاڑی ہونا چاہیے ۔انہوں نے کہاکہ میں چاہتا ہوں کہ میری سکھائی ہوئی چیزوں پر مخلصانہ طور پر عمل ہونا چاہیے ۔ جموں وکشمیر میں ٹیلنٹ کی کوئی کمی نہیں ہے ۔ سری نگر اور جموں میں قریب 200 سے 250 نوجوان کھلاڑیوں نے کیمپوں میں شرکت کی۔ ان میں سے بیشتر کھلاڑی ٹیلنٹ سے مالا مال ہیں۔ وہ اچھی گیندبازی اور اچھی بلے بازی جانتے ہیں۔ عرفان نے کہا 'بعض کھلاڑیوں کی شکایت تھی کہ اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کرنے کے باوجود انہیں پچھلی بار رنجی ٹرافی کھیلنے کا موقع نہیں دیا گیا تھا۔ میرا ماننا ہے کہ اچھی کاکردگی کا مظاہرہ کرنے والے کھلاڑیوں کو کسی بھی صورت میں نظرانداز نہیں کیا جانا چاہیے '۔ انہوں نے کہا 'یہ میرا جموں وکشمیر میں پہلا سیزن ہے ۔ کرکٹ ایسوسی ایشن کے سی ای او عاشق بخاری ریاست میں کرکٹ کو نئی بلندیوں تک لے جانے کی ہر ممکن کوششیں کررہے ہیں۔ پہلی مرتبہ کرکٹ ایسوسی ایشن کی طرف سے اضلاع میں بھی کیمپوں کا انعقاد کیا گیا ہے ۔ ہم چاہتے ہیں کہ اضلاع میں موجود ٹیلنٹ کو مین اسٹریم میں لایا جائے ۔ یہاں ٹیلنٹ کی کوئی کمی نہیں ہے لیکن اس کو نکھارنے کی ضرورت ہے '۔
 جموں وکشمیر کرکٹ ایسوسی ایشن نے عرفان پٹھان کو ایک سال کے لئے ریاست کے کرکٹ کھلاڑیوں کا کوچ مقرر کیا ہے ۔ انہوں نے کہا 'ایسوسی ایشن چاہتی ہے کہ میں اس کنٹریکٹ میں توسیع کروں۔ لیکن میں فیصلہ لینے میں کچھ وقت لوں گا۔ ہم نے رنجی ٹرافی کے لئے اپنی تیاریوں میں تیزی لائی ہے انہوں نے مایہ ناز کرکٹر مہندر سنگھ دھونی کو بھارتی کرکٹ ٹیم کا اہم ستون قرار دیتے ہوئے کہا کہ دھونی جس طرح کھلاڑی کی سرپرستی کرتے ہیں وہ قابل تعریف ہے ۔ پٹھان نے یو این آئی کے ساتھ اپنے ایک انٹرویو میں بتایا 'ماہی ﴿ایم ایس دھونی﴾ انڈین کرکٹ ٹیم کے ایک اہم ستون ہیں۔ جس طرح وہ میدان کے اندر اور میدان سے باہر ساتھی کھلاڑیوں کی سرپرستی کرتے ہیں، وہ قابل تعریف ہے '۔ 2019 میں کھیلے جانے والے عالمی کپ کرکٹ کے لئے بھارتی ٹیم میں شامل کئے جانے کے امکانات پر عرفان پٹھان نے کہا 'میں کرکٹ کھیلتا رہوں گا اور اس سے لطف اندوز ہوتا رہوں گا۔ جب کھلاڑی مسلسل اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کرتا ہے تو اس کیلئے راہیں کھلی ہوتی ہیں۔پٹھان نے بھارتی کرکٹ ٹیم میں کھیلنے کا آغاز 2003 میں سورو گانگولی کی کپتانی میں کیا تھا۔ بھارتی کرکٹ میں اب تک کی بہترین کپتانی کے بارے میں پوچھے جانے پر عرفان نے کہا 'کپتانوں کا ایک دوسرے سے موازنہ کرنا بہت مشکل ہے ۔ گانگولی نے بحیثیت کپتان جو خدمات انجام دیں، وہ ہمیشہ یاد رکھی جائیں گی۔
 ایم ایس دھونی جنہوں نے ملک کو مسلسل جیت دلائی، کی خدمات بھی قابل تعریف ہیں'۔
انہوں نے کہا 'اس وقت بھی بھارتی ٹیم وراٹ کوہلی کی کپتانی میں اچھی کارکردگی کا مظاہر کررہی ہے '۔ بتادیں کہ جموں وکشمیر کرکٹ ایسوسی ایشن نے عرفان پٹھان کو آنے والے رانجی ٹرافی سیزن کے لئے ریاست کے کھلاڑیوں کا کوچ مقرر کیا ہے ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں