’ماہانہ چند روپے کیلئے ضمیر کا سودا نہیں کروں گا ‘ کشمیر ی آئی اے ایس شاہ فیصل کا حکومتی آرڈر پر ردِ عمل

سرینگر/کے این این/سوشل میڈیا پر اپنے خیالات کا اظہار کرنے پر حکومت ِ ہند کی جانب سے محکمانہ کارروائی کرنے کے احکامات پر ردِ عمل ظاہر کرتے ہوئے کشمیری آئی اے ایس ٹاپر شاہ فیصل نے کہا ہے کہ ماہانہ چند روپے کیلئے وہ اپنے ضمیر کا سودا نہیں کرسکتے۔انہوں نے کہا کہ اُنہیں اپنی ملازمت کھونے پر کوئی ڈر نہیں ہے ۔ آئی اے ایس امتحانات میں اول نمبر حاصل کرنے والے پہلے کشمیری شاہ فیصل نے حکومت ہند کی جانب سے اُن کے خلاف بھارت کو ’ریپستان ‘ کہہ دینے پر محکمانہ کارروائی کرنے کے احکامات پر ردِ عمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ وہ اپنے ضمیر کا سودا نہیں کرسکتے ۔انہوں نے حکومت ہند کی جانب سے جاری کئے آرڈر پر اپنا ردِ عمل سوشل میڈیا پر ظاہر کرتے ہوئے کہا ’مجھے نوکری کھونے کا کوئی ڈر نہیں ،لیکن میں نے جو کہا میں اُس پر قائم ہوں ‘۔شاہ فیصل جو اس وقت اسٹیڈی لیو پر امریکہ میں ہیں۔انہوں نے کہا ’مجھے ماہانہ چند روپے کھونے کا کوئی ڈر نہیں ہے،یہ صرف ایک ملازمت ہے اور مجھے یقین ہے کہ میں بے روزگار نہیں رہوں گا،اس عظیم دنیا میں کافی امکانات ہیں ‘۔ان کا کہناتھا کہ ’میں نے جو کچھ بھی کہا میں اُس پر قائم ہوں ،ہم جس مقصد کیلئے کھڑے ہیں ،مجھے وہ مقصد ہر کام سے زیادہ عزیر ہے ‘۔یاد رہے کہ جموں وکشمیر حکومت نے 2010 بیچ کے آئی اے ایس ٹاپر شاہ فیصل کے خلاف محکمانہ تحقیقات شروع کردی ہے۔ شاہ فیصل جو اس وقت اسٹیڈی لیو پر امریکہ میں ہیں، پر الزام ہے کہ انہوں نے اپنے ایک ٹویٹ میں بھارت کے لئے ’ریپستان ‘کا لفظ استعمال کیا ہے۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں