گورنر نے مغل روڈ کی خستہ حالت پر برہمی کا اظہار کیا ذمہ داریوں کا تعین کرنے اور اس رابطہ سڑک کے بہتر رکھ رکھاؤ کو یقینی بنانے پر زور دیا

سرینگر /گورنر این این ووہرا نے مغل روڈ کی خستہ حالت پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے پی ڈبلیو ڈی محکمہ کو ہدایت دی ہے کہ وہ اس اہم سڑک کے رکھ رکھاؤ میں کوتاہی برتنے کے حوالے سے ذمہ داریوں کا تعین کرے کیوں کہ یہ اہم سڑک کشمیر وادی کو ملک کے دیگر حصوں کے ساتھ ملاتی ہے۔یہاں پی ڈبلیو ڈی، منصوبہ بندی و ترقی اور فائنانس محکمہ کے افسروں کی ایک مشترکہ میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے گور نرنے کہا کہ انہوں نے پچھلے ماہ مغل روڈ پر سفر کیا اور وہ سڑک کی حالت دیکھ کر رنجیدہ ہوئے کیوں کہ یہ کافی جگہوں پر خستہ حال تھی جس کے نتیجہ میں مسافروں کو کافی دقتوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔گورنر کے مشیر بی بی ویاس، خورشید احمد گنائی اور چیف سیکرٹری بی وی آر سبھرامنیم بھی میٹنگ میں موجود تھے۔گورنر نے کہا کہ اس اہم سڑک کے سالانہ رکھ رکھاؤ کے لئے10 کروڑ روپے مختص رکھے جاتے ہیں اور ایسا لگتا ہے کہ کافی عرصے سے اس سڑک کی مناسب رکھ رکھاؤ کی طرف توجہ نہیں دی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ لیت لعل برداشت نہیں کیا جاسکتا۔گورنر نے کہا کہ پی ڈبلیو ڈی محکمہ کو ذمہ داریوں کا تعین کر کے کوتاہی برتنے والے افسروں کی نشاندہی کرنی چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ اس سڑک کے رکھ رکھاؤ اور تجدید و مرمت کے لئے فوری اقدامات کئے جانے چاہئیں۔کمشنر سیکرٹری پبلک ورکس خورشید احمد شاہ نے میٹنگ میں اُن اقدامات کے بارے میں جانکاری دی جو مغل روڈ کی بہتری اور اس کو ہر موسم میں سفر کے موافق بنانے کے لئے اُٹھائے جاتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ نیشنل ہائی وے انفراسٹرکچر ڈیولپمنٹ کارپوریشن لمٹیڈ نے 84 کلو میٹر لمبی اس سڑک پر ٹنل تعمیر کرنے کے لئے تفصیلی پروجیکٹ رپورٹ تیار کرنے کی خاطر ٹینڈر جاری کئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ٹنل کی تعمیر سے وقت اور وسائل کو بچانے میںمدد ملے گی۔گورنر نے ریاسی ضلع میں کٹرہ ریلوے سٹیشن سے ککریال تک7 کلو میٹر سڑک کی تعمیر میں بلا وجہ تاخیر پر بھی ناراضگی کا اظہار کیا۔ انہوں نے پلاننگ اینڈ ڈیولپمنٹ محکمہ کو ہدایت دی کہ وہ اس سڑک پر ایک مٹیلک پُل تعمیر کرنے کے امکانات کا جائیزہ لیں تا کہ اس پر جلد از جلد ٹریفک چلائی جاسکے۔پرنسپل سیکرٹری فائنانس نوین کے چودھری، پرنسپل سیکرٹری پلاننگ،ڈیولپمنٹ اینڈ مونیٹرنگ روہت کنسل، کمشنر سیکرٹری مال شاہد عنائت اللہ، کمشنر سیکرٹری جنگلات سوربھ بھگت اور کئی دیگر افسران بھی موجود تھے۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں