کٹھوعہ آبروریزی اور قتل معاملہ ملزموں کے رشتہ داروں کی طرف سے دو گواہوں کو قتل کرنے کی دھمکیاں

سرینگر/ جے کے این ایس /کٹھوعہ آبروریزی اور قتل کیس نے اُس وقت سنسنی خیز موڑ لیا جب کرائم برانچ نے کٹھوعہ پولیس اسٹیشن رپورٹ درج کی کہ دو اہم گواہوں کو گرفتار افراد کے لواحقین اور دوست قتل کرنے کی دھمکیاں دے رہے ہیں۔ کرائم برانچ نے کٹھوعہ پولیس نے گواہوں کو سیکورٹی فراہم کرنے کے ساتھ ساتھ ملوث افرا دکے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کے احکامات صادر کئے ۔ کٹھوعہ پولیس کے مطابق معاملے کو سنجیدگی سے لیتے ہوئے کیس درج کیا گیا ہے اور ملوثین کے خلاف سخت کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔ کٹھوعہ آبروریزی اور قتل کیس میں ملزمین کے خلاف گواہی دینے والے /جاری صفحہ نمبر۱۱پر
 دو افراد کو گرفتار شدہ افراد کے لواحقین اور دوستوں کی جانب سے قتل کرنے کی دھمکیاں دی جار ہی ہیں۔ معلوم ہوا ہے کہ گواہوں نے اس سلسلے میں کرائم برانچ کو تحریری طورپر آگاہ کیا ، کرائم برانچ نے کٹھوعہ پولیس کو فوری طورپر دھمکیاں دینے والے افراد کی گرفتاری عمل میں لاکر اُن کے خلاف کیس درج کرنے کے احکامات صادر کئے ہیں۔ گواہوں کے مطابق انہیں دھمکیاں دی جار ہی ہیں کہ وہ پٹھان کوٹ عدالت میں پھر سے بیان دے کر پہلے بیان سے مکر جائے اور اس کیلئے انہیں دھمکایا جارہا ہے۔ کرائم برانچ نے کٹھوعہ پولیس کو گواہوں کو فوری طورپر سیکورٹی فراہم کرنے کے ضمن میں بھی آگاہ کیا ہے۔ دو گواہوں کی شناخت ظاہر کرنے سے کرائم برانچ نے معذوری ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ گواہوں کو فوری طورپر سیکورٹی فراہم کرنے کے سلسلے میں عدالت عالیہ سے بھی رجوع کیا جائے گا۔ اس بیچ کٹھوعہ پولیس نے اس بات کی تصدیق کی کہ دو گواہوں نے تحریری طورپر پولیس کو آگاہ کیا کہ انہیں ملوثین کے گھر والوں کی جانب سے قتل کرنے کی دھمکیاں مل رہی ہیں۔ کٹھوعہ پولیس کے مطابق اس ضمن میں ایف آئی آر درج کرکے تحقیقات شروع کی گئی ہے اور گواہوں کو ڈرانے دھمکانے والوں کو بہت جلد کیفرکردار تک پہنچایا جائے گا۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں